اردن: 16 سالہ بچے کے جنازہ میں شامل ہزاروں لوگوں کا اسرائیل کے خلاف مظاہرہ

Jul 26, 2017 09:06 AM IST | Updated on: Jul 26, 2017 09:06 AM IST

عمان۔  اردن کے دارالحکومت عمان میں واقع اسرائیلی سفارت خانے میں گزشتہ دنوں ہونے والی فائرنگ میں مارے گئے اردن کے 16 سالہ لڑکے کے جنازہ میں شامل ہزاروں لوگوں نے اسرائیل کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے سفارت خانہ بند کرنے کا مطالبہ کیا۔ اردن کی پولیس نے کل بتایا تھا کہ سفارت خانے کے سیکورٹی اہلکار کی فائرنگ میں ایک نوجوان لڑکے کی موت ہو گئی۔ اس کے جنازے میں شامل لوگوں نے ’’اردن کی سرزمین پر اسرائیلی سفارت خانے یا سفیر نہیں‘‘ کے نعرے لگائے۔

اردن پولیس نے کہا کہ ایک فرنیچر فرم میں کام کرنے والا لڑکا سامان پہنچانے سفارت خانے گیا تھا جہاں اسرائیلی سیکورٹی گارڈ کے ساتھ اس کا تنازعہ ہو گیا اور سیکورٹی کی فائرنگ میں وہ ہلاک ہوگیا۔ اس واقعہ میں ایک اور شخص کی بھی موت ہو گئی۔ اسرائیل نے الزام لگایا کہ نوجوانوں کی طرف اسکرو ڈائيور سے گارڈ پر حملہ کیا اور گارڈ نے دفاع میں فائرنگ کی۔ انہوں نے نوجوانوں کی اس حرکت کو’دہشت گردانہ حملہ‘قرار دیا۔

اردن: 16 سالہ بچے کے جنازہ میں شامل ہزاروں لوگوں کا اسرائیل کے خلاف مظاہرہ

فوٹو کریڈٹ: رائٹرز

مسجد اقصی کے احاطے میں 14 جولائی کو دو پولیس اہلکار کی موت کے بعد اسرائیل نے وہاں کے دروازے میں میٹل ڈیٹیکٹر لگانے کا فیصلہ کیا جس کے بعد دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی بڑھ گئی۔ اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ کرنے والا اردن مصر کے بعد دوسرا مسلم ملک ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز