قطر نے کی الزامات کی تردید ، قطر ائیرویز کی سعودی عرب کیلئے پروازیں معطل ، لیبا اور یمن نے بھی توڑا سفارتی رشتہ

Jun 05, 2017 07:12 PM IST | Updated on: Jun 05, 2017 07:13 PM IST

دوبئی : سعودی عرب، بحرین ، مصر ، متحدہ عرب امارات اور یمن نے قطر پر دہشت گردی کی تائید و حمایت کا الزام لگاتے ہوئے آج اس سے سفارتی تعلقات منقطع کرنے کا اعلان کردیا۔قطر نے بعض عرب ملکوں کے دعوؤں اور الزامات کو بلاجواز اور بے بنیاد قرار دیا اور قطر ایئرویز نے بھی فوری طور پر سعودی عرب کے لیے اپنی پروازیں معطل کردی ہیں۔

خبروں کے مطابق لیبیا کی مشرقی حکومت نے بھی قطر کے ساتھ سفارتی تعلقات ختم کرنے کا اعلان کردیا۔ پاکستان نے بہر حال دوحہ سے تعلقات بحال رکھنے کا اشارہ دیا ہے ۔ سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے ایک بیان جاری کرکے قطر پر جنگجو گروپوں نیز تشدد پھیلانے والے نظریات کی حمایت کا الزام لگایا ۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ قطر نے اخوان المسلمین، دولت اسلامیہ[داعش] اور القاعدہ سمیت کئی جنگجو اور سخت گیرنظیموں کو پناہ دی ہے اور اور میڈیا کے ذریعے ان کے پیغامات اور اسکیموں کی تشہیر کی ہےجس سے علاقائی استحکام کو نقصان پہنچا ہے۔ایجنسی کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں مزید کہا گیا کہ یمن جنگ میں مصروف سعودی اتحاد میں شامل قطر کے فوجی دستوں کو واپس بھیج دیا جائے گا۔

قطر نے کی الزامات کی تردید ، قطر ائیرویز کی سعودی عرب کیلئے پروازیں معطل ، لیبا اور یمن نے بھی توڑا سفارتی رشتہ

file photo

مصر کی وزارت خارجہ نے آج قومی سلامتی کے مدنظر قطر کے آمد و رفت کے تمام ہوائی اور بحری راستوں کو بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔ مصر نے قطر پر خلیجی ممالک میں اخوان المسلمین سمیت جنگجو تنظیموں کی حمایت کرنے کا الزام لگاکر اس سے سفارتی تعلقات توڑ لیے ہیں۔ بحرین نے کہا ہے کہ اس نے قطر سے داخلی امور میں دخل اندازی اور خلیجی ممالک میں دہشت گردوں کی حمایت اور مداخلت کرنے پر سفارتی تعلقات توڑ ے ہیں۔ بحرین نے قطر کے ساتھ فضائی اور سمندر رابطے توڑ دیئے ہیں نیز اپنے شہریوں کو 14 روز کے اندر قطر چھوڑنے کی ہدایت دی ہے۔ اسی عرصے میں قطر کے سفارتی عملے کو بھی بحرین چھوڑنے کو کہا گیا۔

یمن کی حکومت نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ’قطر کی جانب سے حوثی قبائل اور شدت پسند گروپوں کی حمایت واضح ہے، لہذا ہم سعودی اتحاد سے قطر کو بے دخل کیے جانے کے فیصلے کی حمایت کرتے ہیں‘۔ قطر نے دہشت گردی کی مبینہ حمایت کرنے پر سعودی عرب، مصر، بحرین، یمن اور متحدہ عرب امارات کی جانب سے سفارتی تعلقات منقطع کرنے پر افسوس کا اظہار کیا۔ قطر ی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں ان دعوؤں اور الزامات کو بلاجواز اور بے بنیاد قرار دیا گیا۔

رائٹر کے مطابق امریکی سیکریٹری آف اسٹیٹ ریکس ٹیلرسن اور ڈیفنس سیکریٹری جم میٹس کا کہنا ہے کہ انھیں بعض خلیجی ممالک سے اس طرح کے فیصلے کی امید نہیں تھی کہ وہ دہشت گردی کے خلاف جنگ کو متاثر کرنے پر قطر کے ساتھ تعلقات منقطع کرلیں گے۔انہوں نے بہر حال ان ممالک پر اپنے اختلافات کو دور کرنے پر زور دیا۔ریکس ٹیلرسن نے صحافیوں سے گفتگو میں کہا کہ انہیں امید نہیں کہ اس اقدام سے کوئی خاص اثر پڑے گا۔صرف متحد ہوکر ہی خطے میں اور عالمی سطح پر دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑی جاسکتی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز