روہنگیا بچوں کو مہلک بیماری سے بچانے کے لئے عالمی ادارہ صحت کی ویکسینیشن مہم

Sep 18, 2017 11:44 AM IST | Updated on: Sep 18, 2017 11:44 AM IST

اقوام متحدہ۔ میانمار سے لاکھوں کی تعداد میں نقل مکانی کرکے بنگلہ دیش پہنچ رہے روہنگیا پناہ گزینوں کے بچوں کو خسرہ، روبیلا اور پولیو جیسی جان لیوا بیماریوں سے بچانے کے لئے عالمی ادارہ صحت نے ویکسینیشن مہم شروع کی ہے۔ اقوام متحدہ کی جانب سے کل یہاں جاری ایک ریلیز کے مطابق اقوام متحدہ کے بچوں کے فنڈ (یونیسیف) اور عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) 68 پناہ گزین کیمپوں میں رہ رہے 15 سال سے کم عمر کے تقریبا ڈیڑھ لاکھ روہنگیا بچوں کی ویکسینیشن کے لئے بنگلہ دیش کی وزارت صحت کی جانب سے چلائی جانے والی مہم میں تعاون کر رہا ہے۔

ڈبلیو ایچ او کے بنگلہ دیش کے سربراہ نورتناسامي پارانیتھارن نے کہا، "ہم خوش ہیں کہ خسرہ کی ممکنہ وبا پھیلنے سے قبل ہی ہم ویکسینیشن مہم شروع کرنے میں کامیاب رہے۔"

روہنگیا بچوں کو مہلک بیماری سے بچانے کے لئے عالمی ادارہ صحت کی ویکسینیشن مہم

روہنگیا پناہ گزینوں کے ایک گروپ کی فائل فوٹو: رائٹرز۔

اقوام متحدہ کی صحت سے متعلق ایجنسی نے سات روزہ مہم چلائی ہے جس کا انتظامات اور نگرانی بھی وہی کرے گی۔ یونیسیف اس مہم کے لئے ویکسین، سرنج اور وٹامن اےکیپسول فراہم کرے گا۔ یونیسیف کے بنگلہ دیش کے سربراہ ایڈورڈ بگ بیڈر نے کہا، "خسرہ متعدی اور خطرناک بیماری ہے، خاص طور پر ان بچوں کے لئے جو پہلے سے ہی کمزور اور مناسب پرورش و غذاسے محروم ہیں۔ ہزاروں افراد ہر روز سرحد پار کر کے بنگلہ دیش جا رہے ہیں۔

اس طرح مہلک بیماریوں کے خلاف تحفظ کے لئے ویکسین بہت اہمیت کا حامل ہے۔ " غور طلب ہے کہ اقوام متحدہ کی تشخیص کے مطابق 25 اگست کو میانمار میں بھڑکے تشدد کے بعد سے اب تک چار لاکھ 10 ہزار روہنگیا مہاجر بنگلہ دیش پہنچ چکے ہیں جن میں سے 60 فیصد بچے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز