بدھسٹ حملہ آوروں نے روہنگیا آبادی کے لئے ریڈ کراس کی امدادی کشتی کو روکنے کے لئے پٹرول بم پھینکا

سیتوے۔ جنوبی میانمار میں راخین صوبے کے تشدد زدہ علاقوں میں متاثرین کے لئے امداد لے جانے والی ریڈ کراس کی کشتی پر آج بدھسٹ حملہ آوروں نے پٹرول بم پھینک کر اسے روکنے کی کوشش کی۔

Sep 21, 2017 02:55 PM IST | Updated on: Sep 21, 2017 02:56 PM IST

سیتوے۔ جنوبی میانمار میں راخین صوبے کے تشدد زدہ علاقوں میں متاثرین کے لئے امداد لے جانے والی ریڈ کراس کی کشتی پر آج بدھسٹ حملہ آوروں نے پٹرول بم پھینک کر اسے روکنے کی کوشش کی، جہاں اقوام متحدہ نے میانمار فوج کی کارروائی کو روہنگیا آبادی کی نسل کشی قرار دیا ہے۔ بدھسٹ حملہ آوروں نے امدادی کشتی کو دیکھتے ہی اس کا راستہ روکنے کی کوشش کی اور پولس کی مداخلت سے پہلے ہی اس پر پٹرول بم سے حملہ کردیا۔

ریڈ کراس کی امدادی کشتی پر حملہ کرنے میں سیکڑوں بدھسٹ مظاہرین شامل تھے، جن کے ہاتھوں میں لاٹھیاں، لوہے کے ہتھیار اور پٹرول بم تھے۔ یہ واقعہ بدھ کے روز کا ہے جو فرقہ وارانہ عداوت کس حد تک بڑھ چکی ہے، اس کی عکاسی کرتا ہے۔ امدادی عملہ نے بتایا کہ امدادی کشتی شمالی صوبہ راخین کی طرف جا رہی ہے، جہاں 25 اگست کو باغیوں کے حملے کے بعد فوج کی پرتشدد کارروائی میں لاکھوں افراد در بدر ہوئے ہيں ، جن میں سے تقریبا چار لاکھ 20 ہزار روہنگیا بنگلہ دیش پہنچے ہیں، جبکہ روہنگیا آبادی کی بڑی تعداد اب بھی میانمار میں ہیں، جو تشدد کی زد میں ہیں۔ یہ لوگ اپنا گھر چھوڑ کر دوسری جگہوں میں چھپے ہیں، جنکے پاس کھانے پینے کا سامان بھی نہیں ہے۔

بدھسٹ حملہ آوروں نے روہنگیا آبادی کے لئے ریڈ کراس کی امدادی کشتی کو روکنے کے لئے پٹرول بم پھینکا

بنگلہ دیش کے کاکس بازار میں روہنگیا پناہ گزیں امداد کے لئے جدوجہد کرتے ہوئے، رائٹرز۔

ایک سرکاری اطلاعاتی دفتر نے بتایا کہ ریڈ کراس کی امدادی کشتی پر 50 ٹن امدادی سامان لوڈ تھا، جو راخین کے دارالحکومت سیتوے کی طرف جا رہی تھی، جس پر سیکڑوں کی تعداد میں مظاہرین نے حملہ کرکے اس کو روکنے کی کوشش کی۔ ریاستی حکومت کے سکریٹری ٹین ماؤنگ سوے نے رائٹر سے کہا کہ مظاہرین نے سمجھا کہ کشتی پر امداد صرف روہنگيا بنگالیوں کے لئے پہنچائی جارہی ہے۔ جس کے لئے انہوں نے روہنگیا کے لئے جنگی سامان کا لفظ  استعمال کیا۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے تقریبا 200 پولس اہلکاروں کو کارروائی کرنی پڑی، جس کے لئے انہوں نے ہوا میں فائرنگ کی۔

اطلاعاتی مرکز نے بتایا کہ پولس کی کارروائی میں چند افراد زخمی ہوئے ہیں اور تقریبا آٹھ لوگوں کو حراست میں لیا گيا ہے۔ انٹرنیشنل کمیٹی آف ریڈ کراس (آئی سی آر سی) کے ترجمان نے بتایا کہ کارروائی میں امدادی ایجنسی کا کوئی عملہ زخمی نہيں ہوا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز