میانمار: انسانی بحران کم کرنے کیلئے روہنگیا باغی اراكان روہنگیا ڈیفنس آرمی کا یک طرفہ جنگ بندی کا اعلان

Sep 10, 2017 10:33 AM IST | Updated on: Sep 10, 2017 10:33 AM IST

بینکاک / كاكس بازار :  شمال مغربی میانمار میں انسانی بحران کو کم کرنے کے لئے روہنگیا باغی اراكان روہنگیا ڈیفنس آرمی (اےآرایس اے) نے ایک ماہ کے لئے یک طرفہ جنگ بندی کا اعلان کیا ہے۔ اراكان روہنگیا ڈیفنس آرمی (اےآرایس اے) کی طرف 25 اگست کو رخائن صوبے میں پولیس چوکیوں پر حملے کے خلاف فوج نے بڑی مہم چلائی ہے۔

دریں اثنا، روہنگیا مسلمانوں کے تقریبا تین لاکھ مسلمان میانمار سے ہجرت کرکے بنگلہ دیش آگئے ہیں ۔ اےآرایس اے نے کل ایک ایک بیان جاری کرکے کہا کہ جنگ بندی کے دوران بحران میں پھنسے تمام لوگوں تک انسانی امداد پہنچانے میں امدادی گروپوں کو مدد کی جائے گی۔ انہوں نے تمام متاثرہ افراد کو انسانی امداد دینے کے لئے فوج سے بھی تشدد ترک کرنے کی اپیل کی ہے۔

میانمار: انسانی بحران کم کرنے کیلئے روہنگیا باغی اراكان روہنگیا ڈیفنس آرمی کا یک طرفہ جنگ بندی کا اعلان

اقوام متحدہ پناہ گزین ایجنسی (یو این ایچ سی آر)نے کہا کہ گزشتہ دو ہفتوں میں میانمار سے قریب دو لاکھ 70 ہزار روہنگیا پناہ گزینوں نے نقل مکانی کی ہے۔ میانمار سے نقل مکانی کرنے والے زیادہ تر روہنگیامسلمان بنگلہ دیش میں آئے ہیں۔ یہ لوگ بنگلہ دیش کے دو کیمپوں میں رہتے ہیں جہاں ان کی حالت بہت بری ہے۔

اقوام متحدہ کا اندازہ ہے کہ بھاگ کر آنے والے افراد کی تعداد تین لاکھ تک پہنچ سکتی ہے۔ غور طلب ہے کہ میانمار حکومت کا کہنا ہے کہ اےآرایس اے ایک شدت پسند تنظیم ہے جس کے لیڈر بیرون ملک سے تربیت لیتے ہیں۔ وہیں اےآرایس اے کے مطابق ان کا مقصد میانمار میں رہنے والے روہنگیا کمیونٹی کے لوگوں کی حفاظت کرنا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز