روسی جنگی طیارے نے بالٹک سمندر کے اوپر امریکی جنگی طیارے کا پیچھا کیا

Jun 07, 2017 02:49 PM IST | Updated on: Jun 07, 2017 02:49 PM IST

ماسکو۔  روس کے ایک جنگی طیارہ نے کل بالٹک سمندر کے اوپر اپنی سرحد کے قریب ایک امریکی بمبار طیارے کا پیچھا کرکے اسے وہاں سے جانے پر مجبور کر دیا۔ اس واقعہ نے دونوں ممالک کے درمیان سرد جنگ کی یاد تازہ کرا دی۔ روسی وزارت دفاع نے آج جاری ایک بیان میں بتایا کہ امریکی بمبار طیارہ بی ۔52 کو رات ایک بجے روسی سرحد کے قریب غیر جانبدار علاقے میں دیکھا گیا اور اس کے فورا بعد روسی لڑاکا طیارہ سکھوئی ۔27 نے پرواز بھرتے ہوئے اس کا پیچھا کیا اور ایک محفوظ فاصلہ قائم رکھتے بناتے ہوئے اس کی شناخت کی اور اس کی اس وقت تک نگرانی کی جب تک یہ اس کے سرحدی علاقے سے باہر نہیں چلا گیا۔

ادھر امریکی فوج نے کہا ہے کہ اس کا ہوائی جہاز بین الاقوامی فضائی علاقے میں تھا۔ اگرچہ اس نے روسی فضائیہ کی فوری کارروائی پر کوئی رد عمل ظاہر نہیں کیا ہے۔ فضائیہ کے ترجمان کرنل پیٹرک راڈر نے کہا ’’ہم اس بات کی تصدیق کرتے ہیں کہ امریکی بمبار طیارہ بین الاقوامی فضائی علاقے میں تھا لیکن اس وقت ہمارے پاس ایسی کوئی اطلاع نہیں ہے کہ روسی فضائیہ کے کسی لڑاکے طیارے نے اس کا پیچھا کیا تھا‘‘۔ اس دوران ایک اور واقعہ میں روس نے کہا کہ اس نے بیریٹ سمندر کے اوپر ناروے کے ایک گشتی جہاز کا پیچھا کیا تھا۔ وزارت دفاع نے اس کی شناخت پی ۔3 اوریو اینٹی آبدوز ہوائی جہاز کے طور پر کی تھی۔ وزارت دفاع نے کہا کہ ناروے کا یہ طیارہ اپنے ٹرانسپونڈرس بند کر کے روس کی سرحد کے بہت قریب تھا۔

روسی جنگی طیارے نے بالٹک سمندر کے اوپر امریکی جنگی طیارے کا پیچھا کیا

ناروے کی فوج نے اس بات کی تصدیق کی ہے لیکن یہ بھی کہا کہ یہ عام واقعہ تھا۔ اس دوران سرکاری خبر رساں ایجنسی سپوتنک نے وزارت خارجہ کے افسران میخائل الیانوو کے حوالے سے بتایا کہ حال ہی میں فوجی مشقوں کو دیکھتے ہوئے امریکہ نے برطانیہ واقع لوزیانا فوجی ٹھکانے سے اپنے ان بمبار طیاروں کوہٹایا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز