ہندستان نے امریکہ کے سامنے ایچ1 بی ویزا، کنساس معاملے کو اٹھایا

Mar 04, 2017 07:24 PM IST | Updated on: Mar 04, 2017 07:24 PM IST

نئی دہلی / واشنگٹن۔  ہندوستان نے امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ کے حکام کے ساتھ ایچ -1 بی ویزا اور کنساس میں فائرنگ کے ساتھ امریکہ میں مقیم ہندستانی شہریوں کے تحفظ معاملے کو مؤثر طریقے سے اٹھایا ہے۔ ہندستان کے خارجہ سکریٹری ڈاکٹر ایس جے شنكر نے اپنے چار روزہ امریکی دورے کے دوران یہ معاملے اٹھائے ہیں۔ ان معاملوں سے امریکہ میں رہنے والے ہندوستانی کافی مشتعل ہیں اور وہ چاہتے ہیں کہ مسٹر ٹرمپ کے جیتنے کے بعد ڈاکٹر جے شنكر کے ایجنڈے میں یہ موضوعات ترجیحی بنیاد پر شامل ہوں۔ خارجہ سکریٹری نے آج واشنگٹن میں ایک پریس کانفرنس میں اپنے دورے انتہائی کارآمد قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ دہشت گردی، افغانستان اور ایشیا بہرالکاہل خطہ کے علاوہ وسیع دوطرفہ موضوعات پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔ انہوں نے کہا، "خیر سگالی کے لئے بہت کچھ ہے اور تعلقات کو آگے لے جانے کے بھی وسیع امکانات ہیں۔"

ڈاکٹر جے  شنكر نے کہا، "ایچ1 بی ویزا کے مسئلے پر ہم نے انھیں باخبر کیا ہے کہ اس سے امریکی معیشت کو مدد ملتی ہے۔" ایچ -1 بی ویزے سے امریکی کمپنیوں کو اپنے تکنیکی اور دیگر شعبوں میں غیر ملکی ملازمین کو اپنے یہاں کام پر رکھنے کی اجازت ملی ہوئی ہے۔ امریکہ ہندستانیوں کے لیے ہر سال 65 ہزار ایچ1- بی ویزا جاری کرتا ہے۔ انہوں نے کہا، "ایچ1 بی ایک کاروباری مسئلہ ہے چاہے امریکی شہری اسے امیگریشن کا مسئلہ کیوں نہ مانیں۔" خارجہ سکریٹری نے امریکی حکام کے ساتھ کنساس شہر میں ایک ہندوستانی انجینئر سری نیواس كچی بوٹلا کے قتل کے معاملے پر بھی بات چیت کی۔ انہوں نے کہا، "ہمیں اس واقعہ پر گہرا دکھ ہے اور ہمیں اسے ایک انفرادی واقعہ کے طور پر لینا چاہئے کیونکہ پورا امریکی معاشرہ ایسا نہیں ہے۔"

ہندستان نے امریکہ کے سامنے ایچ1 بی ویزا، کنساس معاملے کو اٹھایا

مسٹر جے شنکرنے مزید کہا کہ امریکی حکام نے یقین دلایا ہے کہ ان کا عدالتی نظام قصورواروں كو سزا دیگا۔ خارجہ سکریٹری نے کہا کہ امریکہ ہندستان کو ایک مضبوط معاشی شراکت دار ملک کے طور پر دیکھتا ہے۔ ساتھ ہی دونوں ممالک کے درمیان مضبوط سیکورٹی اور خارجہ پالیسی کا امتزاج ہے۔ انہوں نے کہا کہ "ٹرمپ انتظامیہ اپنی سابقہ حکومت کے برعکس دنیا کو مختلف نظریہ سے دیکھتی ہے۔ ہمیں نئے ​​امکانات تلاش کرنے کی ضرورت ہے۔ "

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز