قطر کی کوئی ناکہ بندی نہیں کی گئی : سعودی عرب، دوحہ کے خلاف کوئی عسکری اقدام نہیں: یو اے ای

Jun 15, 2017 12:04 AM IST | Updated on: Jun 15, 2017 10:33 AM IST

ریاض : سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ ان کے ملک نے قطر کے ساتھ اپنی سرحدیں بند کر کے یا اس کے طیاروں پر اپنی فضائی حدود سے گزرنے پر پابندی عاید کرکے اس کی کوئی ناکا بندی نہیں کی ہے۔عادل الجبیر نے کہا کہ قطر کی کوئی ناکا بندی نہیں کی گئی ہے۔قطر بیرونی دنیا سے رابطے کے لیے آزاد ہے۔اس کی بندر گاہیں اور ہوائی اڈے کھلے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کی رپورٹ کے مطابق انھوں نے کہا کہ ہم نے جو کچھ کیا،وہ یہ کہ ہم نے انھیں اپنی فضائی حدود استعمال کرنے سے روک دیا ہے اور یہ ہمارا خود مختارانہ حق ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ’’ ہم نے سعودی عرب کی فضائی حدود کو صرف قطر ائیرویز اور قطر کے ملکیتی طیاروں کے لیے بند کیا ہے ،کسی اور کے لیے نہیں ۔

قطر کی کوئی ناکہ بندی نہیں کی گئی : سعودی عرب، دوحہ کے خلاف کوئی عسکری اقدام نہیں: یو اے ای

ادھر متحدہ عرب امارات کے سفیر کے مطابق عرب ممالک کی جانب سے قطر کے خلاف کیے جانے والے اقدامات کا کوئی عسکری پہلو نہیں ہے۔صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے یوسف العتیبہ نے کہا کہ ہم جو کچھ کر رہے ہیں اس کا قطعا کوئی عسکری پہلو موجود نہیں۔

العتیبہ نے مزید بتایا کہ میں نے گزشتہ ہفتے کے دوران امریکی وزیر دفاع جنرل میٹس کے ساتھ 4 مرتبہ ملاقات کی۔ اس دوران مکمل یقین دہانی کرائی گئی کہ ہماری جانب سے کیے اقدامات کسی طور بھی العدید کے فضائی اڈے یا اس سے متعلق کسی بھی معاملے پر اثر انداز نہیں ہوں گے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب اور اس کے خلیجی اتحادیوں نے قطر پر خطے میں دہشت گردی کی حمایت کا الزام عاید کیا ہے اور گذشتہ ہفتے اس کے ساتھ ہر طرح کے تعلقات منقطع کر لیے تھے۔ترکی اور قطر کے حامی بعض ممالک نے خبردار کیا ہے کہ اس طرح ایک انسانی بحران پیدا ہوجائے گا۔

قابل ذکر ہے کہ قطر کی صرف سعودی عرب کے ساتھ زمینی سرحد یں ملتی ہیں اور سعودی عرب ،بحرین اور متحدہ عرب امارات نے قطر ائیرویز کے لیے اپنی فضائی حدود بند کر دی ہیں جس کی وجہ سے ا س کی پروازوں کو بیرون ملک سفر اور وہاں سے واپسی کے لیے لمبا فاصلہ طے کرنا پڑتا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز