شہزادہ محمد بن سلمان نے کیا وعدہ، سعودی عرب میں لائیں گے یہ بڑی تبدیلی

Oct 25, 2017 12:54 PM IST | Updated on: Oct 25, 2017 01:08 PM IST

ریاض۔ سعودی عرب کے شہزادے اور ولی عہد محمد بن سلمان نے مملکت میں معتدل اسلام کو واپس لانے کا عہد کیا ہے۔ اپنے جرات مندانہ اصلاحاتی فیصلوں کے لئے مشہور شہزادہ نے کہا کہ ہم پہلے ایسے نہیں تھے۔ اب ہم اس طرف واپس جا رہے ہیں جیسے پہلے ہم تھے۔ ایک ایسا اسلام جو معتدل ہو اور جس میں دنیا اور دیگر مذاہب کے لئے گنجائش ہو۔ انہوں نے سعودی عرب میں منگل کے روز معاشی امور سے متعلق منعقدہ ایک کانفرنس میں یہ بات کہی۔

شاہی تخت کے وارث نے کہا کہ ہم اپنی زندگی کے آئندہ تیس سال انتہا پسندانہ خیالات کے ساتھ نمٹتے ہوئے گزارنا نہیں چاہیں گے۔ ہمیں آج ہی انہیں ختم کرنا ہو گا۔ ہم جلد ہی انتہا پسندی کو ختم کریں گے۔ ہم اسلام کی معتدل تعلیمات اور اصولوں کی نمائندگی کرتے ہیں۔

شہزادہ محمد بن سلمان نے کیا وعدہ، سعودی عرب میں لائیں گے یہ بڑی تبدیلی

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی فائل فوٹو: رائٹرز۔

خیال رہے کہ حال ہی میں سعودی عرب کے بادشاہ شاہ سلمان نے شاہی فرمان جاری کیا تھا جس میں خواتین کو ملک میں پہلی بار گاڑی چلانے کی اجازت دی گئی ہے۔ شاہی فرمان کے مطابق متعلقہ وزارت اس بارے میں ایک ماہ میں تجاویز دے گی اور یہ حکم 24 جون 2018 تک ہر صورت میں نافذالعمل ہو جائے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز