حوثی باغیوں کے خلاف زمینی کارروائی سے فریقین کا نقصان ہو گا: سعودی عرب

May 03, 2017 10:57 AM IST | Updated on: May 03, 2017 10:57 AM IST

دبئی۔ سعودی عرب کے پرنس محمد بن سلمان نے کہا کہ وہ یمن میں ایران کی حمایت یافتہ حوثی باغیوں کے خلاف ایک بڑی زمینی کاروائی شروع کر سکتے ہیں لیکن اس سے دونوں فریق کو کافی نقصان برداشت کرنا پڑے گا۔ سعودی عرب کے وزیر دفاع اور شہزادے نے کہا کہ 2015 میں یمن کے سوات سے حوثی باغیوں کے کنٹرول کو ختم کرنے کے لئے ملک کی بین الاقوامی سطح پر منظور شدہ حکومت کو بحال کرنا ضروری تھا۔ انہوں نے کہا کہ سعودی عرب اپنے حریف ایران کے ساتھ بات چیت کرنے میں ناکام رہا تھا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق، انھوں نے ایران کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس کے نظریے کا مقصد عالم اسلام کو کنٹرول کرنا ہے اور ایرانی اس کی منطق یہ بیان کرتے ہیں کہ اس طرح وہ امام المہدی کے ظہور کی راہ ہموار کریں گے۔ انھوں نے کہا کہ سعودی عرب کی قیادت میں اتحادی فورسز یمن میں حوثی باغیوں اور صالح ملیشیا کو شکست دینے کی صلاحیت رکھتی ہیں۔

حوثی باغیوں کے خلاف زمینی کارروائی سے فریقین کا نقصان ہو گا: سعودی عرب

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز