سعودی عرب سمیت چار عرب ملکوں نے قطر میں دہشت گرد شخصیات اور اداروں کی فہرست جاری کی

Jun 09, 2017 11:44 AM IST | Updated on: Jun 09, 2017 11:45 AM IST

ریاض : سعودی عرب، مصر، متحدہ عرب امارات اور بحرین نے مشترکہ طور پر 59 شخصیات اور 12 اداروں پر دہشت گردی کے لئے سرمایہ اور قطر سے امداد لینے کا الزام عاید کرتے ہوئے ان پر پابندی لگا دی ہے۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی عرب، مصر، متحدہ عرب امارات اور بحرین دہشت گردی کا مقابلہ کرنے کے کے عزم کی خاطر متحد ہیں تاکہ اسے سرمایہ فراہم کرنے والے سوتے بند کئے جا سکیں اور انتہا پسند خیالات ونظریات کا مقابلہ کرنے کے لئے دہشت گردی کی ترویج کی تشہیر کرنے والے ذرائع کو ناکام بنا سکیں۔ ان کوششوں کا مقصد دہشت گردی کو شکست دینا ہے تاکہ تمام معاشروں کو اس کے اثرات سے محفوظ رکھا جا سکے۔‘‘

بیان کے مطابق دوحہ کی جانب سے طے پانے والے تمام ذمہ داریوں اور معاہدوں کی مسلسل خلاف ورزیوں میں یہ کمٹمنٹ سرفہرست تھی کہ ریاستوں کی سیکیورٹی کو نقصان پہنچانے والےعناصر یا تنظیموں کی پشتی بانی اور انہیں پناہ نہیں دی جائے گی ۔ سنہ 2013 کو ریاض میں طے پانے والے اعلامیہ پر عمل درآمد کی مسلسل درخواستوں اور رابطوں سے قطر اغماص برتتا چلا آ رہا ہے۔ نیز دوحہ نے اعلان ریاض پر عمل کے لئے طے پانے والے طریقہ کار اور 2014 میں طے پانے والے ضمنی معاہدے کو درخو اعتناء نہیں جانا۔

سعودی عرب سمیت چار عرب ملکوں نے قطر میں دہشت گرد شخصیات اور اداروں کی فہرست جاری کی

نتیجتاً چار ریاستوں نے 59 شخصیات اور 122 اداروں کو ممنوعہ دہشت گردوں کی فہرستوں میں شامل کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ اس فہرست میں اضافہ وقتا فوقتا کیا جاتا رہے گا۔‘‘

پابندیوں کا شکار بننے والے اکثریتی اداروں کا تعلق قطر سے ہے جو بقول بیان دوحہ کی دوہری پالیسی کا مظہر ہے:

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز