مسلمان چرچ اور یہودی معبد میں نماز ادا کرسکتے ہیں ، سعودی سینئرعلما کونسل رکن عبد الله بن سليمان کا فتوی

Nov 10, 2017 02:24 PM IST | Updated on: Nov 10, 2017 02:24 PM IST

ریاض : سعودی عرب میں سینئر علما کونسل کے رکن عبد الله بن سليمان المانع نے ایک فتوی جاری کرکے کہا ہے کہ مسلمانوں کا گرجاگھروں اور یہودی معابد میں نماز ادا کرنا جائز ہے ۔ ایک تاریخی حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پیغمبر اسلام نے نجران سے آنے والے عیسائی وفد سے مسجد میں ملاقات کی اور انہیں اس میں یروشلم کی سمت منہ کر کے نماز ادا کرنے کی اجازت دی۔

کویت کے ایک نیوز پیپر اخبار الانباء میں شائع فتوی میں شیخ المانع کا کہنا تھا کہ مسلمان شیعہ، صوفی مساجد سمیت کلیساوں اور یہودی معبدوں میں نماز ادا کر سکتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ حدیث مبارک کی روشنی میں ساری زمین اللہ کی ملکیت ہے۔ سعودی عالم دین کا مزید کہنا تھا کہ اسلام بقائے باہمی اور عدم تشدد کا دین ہے۔ انھوں نے کہا مسلمان عقیدے کے معاملے میں اختلافات کا شکار نہیں ہو سکتے، تاہم وہ فروعی امور میں اختلاف کر سکتے ہیں۔

مسلمان چرچ اور یہودی معبد میں نماز ادا کرسکتے ہیں ، سعودی سینئرعلما کونسل رکن عبد الله بن سليمان کا فتوی

عبد الله بن سليمان نے مزید کہا کہ اسلام رحمدلی اور برداشت کا دین ہے۔ اس میں تشدد، عدم برداشت اور دہشت گردی کی تھوڑی سی بھی گنجائش نہیں ہے۔ شیخ المانع نے مسلمانوں پر زور دیا کہ وہ حقیقی اسلام کی ترویج و اشاعت میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں اور نبی رحمت کی اس سنت پر عمل کرتے ہوئے زندگی گذاریں ، جس میں انہوں نے مختلف ادیان کے لوگوں سے معاملہ کرتے ہوئے رواداری کا مظاہرہ کیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز