پاکستان کے آل راؤنڈر شاہد آفريدی نے بین الاقوامی کرکٹ کو کہا الوداع

Feb 20, 2017 11:18 AM IST | Updated on: Feb 20, 2017 11:20 AM IST

شارجہ۔  پاکستان کے آل راؤنڈر شاہد آفریدی نے آخر کار اپنی بین الاقوامی کرکٹ کو الوداع کہہ دیا ہے۔ 36 سالہ آفریدی نے اتوار کو پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) میں پشاور ظالمي کیلئے 28 گیندوں میں 54 رن بنانے کے بعد بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کرتے ہوئے کہا ’’میں نے بین الاقوامی کرکٹ کو الوداع کہہ دیا ہے۔ میں اس گھریلو لیگ میں اپنے مداحوں کے لئے کھیل رہا ہوں اور مزید دو سال اپنا کھیل جاری رکھوں گا۔ لیکن بین الاقوامی کرکٹ سے اب میں ریٹائرمنٹ لیتا ہوں‘‘۔ 21 سال تک بین الاقوامی کرکٹ کھیلنے والے آفریدی نے 2010 میں ٹیسٹ سے اور 2015 میں ہوئے عالمی کپ کے بعد ون ڈے کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لے لی تھی۔ اس کے بعد وہ وہ صرف گھریلو اور بین الاقوامی ٹي۔20 میچ ہی کھیل رہے تھے۔

گزشتہ برس 2016 میں ہندوستان کی میزبانی میں ہوئے ٹي۔ 20 ورلڈ کپ میں آفريدي پاکستان ٹوئنٹی ۔20 ٹیم کے کپتان تھے۔ لیکن عالمی کپ کے بعد انہوں نے کپتانی سے استعفی دے دیا تھا اور ایک کھلاڑی کے طور پر کھیل کے چھوٹے فارمیٹ میں اپنا کیریئر جاری رکھا تھا۔آفریدی نے 1996 میں کینیا کے خلاف ون ڈے میچ سے اپنی بین الاقوامی کرکٹ کا آغاز کیا تھا لیکن وہ اس وقت سرخيوں میں آئے جب انہوں نے اپنے دوسرے ہی میچ میں سری لنکا کے خلاف کھیلتے ہوئے صرف 37 گیندوں پر سنچری بنا ڈالی تھی۔ ان کے اس ریکارڈ کو 17 سال تک کوئی نہیں توڑ پایا ہے۔ آفریدی نے 1998 میں کراچی میں آسٹریلیا کے خلاف بین الاقوامی ٹیسٹ کرکٹ کا آغاز کیا تھا۔

پاکستان کے آل راؤنڈر شاہد آفريدی نے بین الاقوامی کرکٹ کو کہا الوداع

بوم بوم کے نام سے مشہور آل راؤنڈر آفریدی نے 2006 میں انگلینڈ کے خلاف ٹي ۔20 بین الاقوامی میچ میں قدم جمائے تھے۔ بعد میں وہ بولنگ میں آل راؤنڈر بن گئے، ٹوئنٹی ۔20 کرکٹ میں پاکستان کی شروعاتی کامیابی کا دار و مدار آفريدي پر ہی رہا۔ انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) میں وہ دکن چارجر کی طرف سے بھی کھیل چکے ہیں۔ آفریدی نے 1998 سے 2010 تک 27 ٹیسٹ میچوں کی 48 اننگز میں 1716 رن بنائے جس میں ان کا سب سے زیادہ اسکور 156 کا رہا۔ ٹیسٹ کرکٹ میں انہوں نے پانچ سنچریاں اور آٹھ نصف سنچری لگائیں۔ اس کے علاوہ انہوں نے 48 وکٹ بھی لئے۔ آفریدی اپنا ’شاہد آفریدی فاؤنڈیشن‘ بھی چلاتے ہیں۔ انہوں نے کہا ’’اب میرے لیے میرا فاؤنڈیشن اہم ہیں۔ میں نے اپنے ملک کے لیے پوری سنجیدگی سے کرکٹ کھیلی‘‘۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز