کیرالہ مبینہ لوجہاد کیس : مدتوں بعد ہادیہ نے اپنے شوہر شفین جہاں سے ٹیلی فون پر کی بات چیت

لو جہاد کے مبینہ معاملہ کی وجہ سے موضوع بحث بنی کیرالہ کی 25 سالہ ہادیہ نے طویل عرصہ کے بعد اپنے شوہر شفین جہاں سے ٹیلی فون پر بات چیت کی ۔

Nov 29, 2017 11:29 PM IST | Updated on: Nov 29, 2017 11:29 PM IST

کوچی : لو جہاد کے مبینہ معاملہ کی وجہ سے موضوع بحث بنی کیرالہ کی 25 سالہ ہادیہ نے طویل عرصہ کے بعد اپنے شوہر شفین جہاں سے ٹیلی فون پر بات چیت کی ۔ قابل ذکر ہے کہ گزشتہ روز سپریم کورٹ نے ہادیہ کے بیان کے بعد اس کو والدین کی نگرانی سے آزادی دیتے ہوئے تعلیم مکمل کرنے کی اجازت دیدی تھی۔ عدالت عظمی کی ہدایت کے مطابق شیوراج ہومیوپیتھی میڈیکل کالج میں اپنی تعلیم جاری رکھنے کیلئے سیلم پہنچنے کے ایک دن بعد ہادیہ نے کالج کے ڈین کے فون سے اپنے شوہر سے بات چیت کی۔

کالج کے ڈین جی کنن نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ ہادیہ نے میرے موبائل فون سے اپنے شوہر سے بات چیت کی ۔ جب گارجین کے طور پر میں نے اس سے پوچھا کہ کیا اس کی کسی سے بات چیت کرنے یا ملنے کی خواہش ہے تو ہادیہ نے اپنے شوہر سے بات چیت کرنے کی خواہش ظاہر کی ۔ 25 سالہ ہادیہ کو منگل کی شام کوئمبٹور سے سخت سیکورٹی کے درمیان کیرالہ پولیس کالج لے کر پہنچی تھی۔

کیرالہ مبینہ لوجہاد کیس : مدتوں بعد ہادیہ نے اپنے شوہر شفین جہاں سے ٹیلی فون پر کی بات چیت

قبل ازیں جب صحافیوں نے ہادیہ سے اس کے شوہر شفین جہاں کے بارے میں پوچھا تھا تو اس نے کہا تھا کہ اس کا اپنے شوہر سے گزشتہ کئی مہینوں سے کوئی رابطہ نہیں ہے ، کیونکہ اس کے پاس موبائل فون نہیں ہے اور اس نے صرف اپنے والدین سے بات چیت کی ہے ۔ ساتھ ہی ساتھ ہادیہ نے یہ بھی کہا تھا کہ وہ اپنے شوہر سے بات چیت کرنے کو لے کر کافی پرجوش ہے۔

ہادیہ پر نہیں ہے کسی طرح کی کوئی پابندی

مذہب اسلام قبول کرکے کیرالہ میں ایک مسلم نوجوان شفین جہاں سے شادی کرنے کی وجہ سےہادیہ سرخیوں میں ہے ۔ ڈین کا کہنا ہے کہ اپنے شوہر سے بات چیت کے بعد لگتا ہے کہ اس کو ڈپریشن سے کافی راحت ملی ہے ۔ ڈین کے مطابق کسی سے بات چیت کرنے یا کسی سے اس کے ملنے پر کوئی پابندی نہیں لگائی گئی ہے۔

کالج میں تناو پر ہادیہ کا اظہار افسوس

ڈین کنن کے مطابق ہادیہ نے کالج میں موجود تناو کے ماحول اور اس کی وجہ سے دیگر طلبہ کو پریشانی پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ کنن نے کہا کہ اس نے اپنے نام میں تبدیلی کیلئے کوئی درخواست نہیں دی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس نے اپنے ماضی کے نام اکھیلہ اشوکن سے ہی انٹرن شپ کیلئے درخواست دی ہے۔

چھٹیوں کو لے کر عدالت جائے گی کالج انتظامیہ

ڈین کنن کے مطابق اس بات کو لے کر تھوڑا تذبذب ہے کہ کالج میں چھٹیوں کے دوران ہادیہ کو کہاں اور کس کے ساتھ بھیجا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ کالج انتظامیہ اس سلسلہ میں سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ کالج کے سبھی قوانین و ضوابط اور پابندیاں ہادیہ پر بھی نافذ ہوں گی اور ہفتہ میں ایک مرتبہ اس کو اپنی ضرورت کی اشیا خریدنے کیلئے ہاسٹل کے وارڈن کے ساتھ باہر جانے کی اجازت دی جائے گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز