خون کے آنسو روتی ہے 3 سال کی یہ معصوم بچی، باپ نے مانگی پی ایم مودی سے مدد

Jul 08, 2017 01:20 PM IST | Updated on: Jul 08, 2017 01:24 PM IST

حیدرآباد۔ حیدرآباد کی رہنے والی ایک تین سالہ بچی اهانا خون کے آنسو روتی ہے۔ اس کے گھر والے پریشان ہیں کیونکہ علاج کے بعد بھی خون بہنا بند نہیں ہوا ہے۔ آگے علاج کے لئے گھر والوں کے پاس پیسے نہیں ہیں۔ ڈاکٹر بھی ابھی مستقل علاج کے بارے میں کچھ واضح نہیں بتا پا رہے ہیں۔

ڈاکٹر سريشا کا کہنا ہے کہ اهانا نام کی بچی کو هیمیٹوڈروسس نام کی نایاب بیماری ہے۔ اس بیماری میں پسینہ یا آنسو خون میں مل کر باہر آتے ہیں۔ ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ علاج کے بعد خون بہنا کم ہو گیا ہے۔ دراصل، اهانا کا علاج کرنے سے خون آنا تو کم ہو گیا ہے لیکن مکمل طور پر رکا نہیں ہے۔ اس کے لئے اس کے اور علاج کی ضرورت ہے۔

خون کے آنسو روتی ہے 3 سال کی یہ معصوم بچی، باپ نے مانگی پی ایم مودی سے مدد

اهانا کے والد محمد افضل نے اب وزیر اعلی کیسی راؤ اور وزیر اعظم نریندر مودی سے مدد کے لئے درخواست کی ہے۔ ان کا کہنا ہے، 'جب میں ڈاکٹروں سے مستقل علاج کے لئے پوچھتا ہوں تو ان کے پاس کوئی جواب نہیں ہوتا۔ میں نے وزیر اعلی اور وزیر اعظم سے مدد کے لئے درخواست کی ہے۔ '

افضل بتاتے ہیں، 'اهانا کو ہفتے میں پانچ بار اس دقت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اس کی آنکھوں سے خون نکلتا ہے، وہ بے ہوش ہونے لگتی ہے اور دورے پڑنے لگتے ہیں۔ ' خبر یہ بھی ہے کہ اهانا کے گھر والوں کی اقتصادی حالت کو دیکھتے ہوئے کچھ غیر سرکاری تنظیمیں ان کی مدد کے لئے آگے آئی  ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز