کرناٹک ایڈمنسٹریٹیو سروس میں گلبرگہ کی انجم تبسم نے حاصل کی نمایاں کامیابی

May 13, 2017 01:39 PM IST | Updated on: May 13, 2017 01:39 PM IST

گلبرگہ۔ کرناٹک ایڈمنسٹریٹو سروس کے  گزشتہ ہفتے جاری کردہ  نتائج میں گلبرگہ سے صرف ایک مسلم امیدوار انجم تبسم کو کامیابی ملی ہے۔ ٹریننگ کے بعد انجم کو ریونیو ڈپارٹمنٹ میں بحیثیت تحصیلدار تعینات کیا جائیگا۔ انجم کا کہنا ہے کہ وہ اس سوچ کو توڑنا چاہتی ہیں  کہ خاتون خانہ کو صرف چہار دیواری تک ہی محدود رہنا چاہئے۔ کے اے ایس کامیاب انجم دوسری لڑکیوں کو پیغام بھی دینا چاہتی ہیں۔ انجم کا کہنا ہے کہ منزلیں اور بھی ہیں اور راہیں بھی ، بس قوت ارادی کی ضرورت ہے۔ عموما مسلم معاشرے میں دیکھا جاتا ہے کہ شادی کے بعد لڑکی کی دلچسپی تعلیم اور مسابقت میں کم ہو جاتی ہے۔ شوہر اور بچوں کو ہی کل کائنات سمجھ کر مسلم لڑکیاں اپنے آپ کو گھر کی چہار دیواری تک محدود رکھتی ہیں لیکن گلبرگہ کی انجم تبسم اس روش کوتوڑنے میں کامیاب ہوئی ہیں۔ ایک بیٹی، ایک بہو ایک بیوی کے ساتھ ساتھ ایک ماں ہوتے ہوئے بھی انجم نے مسابقت کی ہمت نہیں ہاری۔ کرناٹک ایڈمسنٹریٹو سروس میں انجم نے شاندار کامیابی حاصل کی ہے ۔ انجم کے مطابق انہیں اس کے لیے لوہے کے چنے چبانے پڑے ہیں۔

انجم، بائیو ٹکنالوجی میں ایم ایس سی ہیں۔ کچھ دن قبل تک وہ کے بی این انجینئرنگ کالج میں لیکچرر کے طور پر خدمات انجام دے رہی تھیں۔ اب  ان کو کے اے ایس میں کامیابی ملی ہے ۔ ٹریننگ کے بعد ابتدائی طور پریہ بطور تحصیلدار کام کریں گی۔ اپنی کامیابی کے بعد انجم  دوسرے طلبا کو بھی کامیابی کے فن  بتا رہی ہیں۔

کرناٹک ایڈمنسٹریٹیو سروس میں گلبرگہ کی انجم تبسم نے حاصل کی نمایاں کامیابی

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز