کیرالہ تشدد پر جیٹلی نے کہا : اگر بی جے پی حکومت والی ریاست میں ایسا ہوتا تو ایوارڈ لوٹا دیئے جاتے

Aug 06, 2017 09:35 PM IST | Updated on: Aug 06, 2017 09:35 PM IST

مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے اتوار کو کیرالہ کا دورہ کیا۔ جیٹلی نے وہاں حال ہی میں مارے گئے آر ایس ایس کارکن کے اہل خانہ سے ملاقات کی۔ کیرالہ میں سی پی ایم کے کارکنوں پر اس قتل کا الزام ہے۔

جیٹلی ہوائی اڈے سے ای راجیش (34) کے گھر گئے۔ ایک ہفتے پہلے راجیش کا قتل کر دیا گیا تھا۔ جیٹلی نے راجیش کی بیوی، ان کے دو بچوں اور خاندان کے دیگر ارکان سے ملاقات کی۔ کیرالہ کے ایک روزہ دورے پر آئے جیٹلی کا ہوائی اڈے پر بھارتیہ جنتا پارٹی کی ریاستی یونٹ کے لیڈروں نے خیر مقدم کیا۔

کیرالہ تشدد پر جیٹلی نے کہا : اگر بی جے پی حکومت والی ریاست میں ایسا ہوتا تو ایوارڈ لوٹا دیئے جاتے

اس موقع پر جیٹلی نے کہا کہ سیاسی کارکنوں پر حملے ہو رہے ہیں، حملے کے صرف ایک دو کیس نہیں ہے بلکہ کئی معاملات سامنے آئے ہیں جو کہ روزانہ ہو رہے ہیں۔ ریاست میں خوف اور دہشت کا ماحول ہے۔جیٹلی نے مزید کہا کہ کسی بھی طرح کے تشدد کیلئے سماج میں کوئی جگہ نہیں ہے، ہمیں اس کی مذمت کرنی چاہئے۔ میری ریاستی حکومت سے اپیل ہے کہ ریاست کو ترقی کی جانب آگے بڑھانے کے لئے ریاست میں امن برقرار رکھنے کی ضرورت ہے۔

جیٹلی نے کہا کہ سیاسی تشدد کے جس طرح کے واقعات کیرالہ میں ہو رہے ہیں، اگر وہ بی جے پی یا این ڈی اے حکومت والی ریاستوں میں ہوتیں تو کیا ہوتا؟ ایوارڈ واپس کر دیے جاتے، پارلیمنٹ کو کام نہیں کرنے دیا جاتا اور ملک و بیرون ملک مہم شروع ہو جاتی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز