سنجوان فوجی کیمپ پر دہشت گردانہ حملہ میں شہید ہوئے 7 میں سے 5 جوان مسلمان : اسد الدین اویسی

Feb 13, 2018 07:09 PM IST | Updated on: Feb 13, 2018 08:52 PM IST

حیدر آباد : مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اور ممبر پارلیمنٹ اسد الدین اویسی نے جموں و کشمیر کے سنجوان میں فوجی کیمپ پر دہشت گردانہ حملہ پر کہا ہے کہ لوگوں کو مسلمانوں کی حب الوطنی پر سوال نہیں اٹھانا چاہئے ۔ اسدالدین اویسی کے مطابق دہشت گردانہ حملہ میں جو سات جوان شہید ہوئے ہیں ، ان میں سے پانچ کشمیری مسلمان تھے۔

اسد الدین اویسی نے کہا کہ "سات میں سے پانچ جوان جو شہید ہوئے ہیں وہ کشمیری مسلمان تھے ، اب اس پر کیوں کچھ نہیں کہا جارہا ہے ، اس سے سبق حاصل کرنا پڑے ان لوگوں کو جو مسلمانوں کی وفاداری پر شک کرتے ہیں ، جو ان کو آج بھی پاکستانی کہہ رہے ہیں ، ہم تو جان دے رہے ہیں "۔

ایم آئی ایم سربراہ نے جموں و کشمیر کی ریاستی حکومت پر بھی نشانہ سادھا۔ انہوں نے کہا کہ "بی جے پی - پی ڈی پی والے دونوں بیٹھ کر ملائی کھا رہے ہیں ، یہ ان کی ناکامی ہے ، کب تک ڈراما کرتے رہیں گے یہ لوگ "۔

قابل ذکر ہے کہ تین دن قبل سنجوان فوجی کیمپ پر فدائین حملہ کیا گیا تھا ، جس میں اب تک چھ جوان شہید ہوئے ہیں جبکہ ایک شہری کی بھی موت ہوگئی ہے۔ اس حملہ میں تین دہشت گرد بھی مارے گئے ہیں ۔ ان دہشت گردوں کے پاس سے بھاری تعداد میں ہتھیار برآمد ہوئے ہیں ۔ شہید جوان میں مدن لال چودھری ، محمد اشرف ، حبیب اللہ قریشی ، اقبال شیخ ، منظور احمد اور راکیش چندر شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ اقبال شیخ کے والد محی الدین شیخ کی بھی حملہ میں موت ہوگئی ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز