bangalore maulana iftikhar ahmed qasmi on hijab and other issues in janta ki adalat– News18 Urdu

ہندوستان دارالامن ، ملک کے قوانین کی خلاف ورزی کی اجازت نہیں دیتا ہے اسلام : مولانا افتخار احمد قاسمی

ویژن کرناٹک کے تحت جنتا کی عدالت پروگرام کا انعقاد کیا گیا تھا ۔ عوام کےڈھیرسارے سوالات کا جواب دینے کیلئے جمعیت علما ہند کے ریاستی صدر مولانا افتخار احمد قاسمی حاضر ہوئے ۔

Jan 02, 2019 05:41 PM IST | Updated on: Jan 02, 2019 05:41 PM IST

ہندوستان دارالامن ہے، ملک کے قوانین کی خلاف ورزی کرنے کی اجازت مذہب اسلام ہرگزنہیں دیتا۔ بنگلورومیں جنتا کی عدالت میں مولانا افتخاراحمد قاسمی نے ان خیالات کا اظہارکیا۔ویژن کرناٹک کے تحت جنتا کی عدالت پروگرام کا انعقاد کیا گیا تھا ۔ عوام کےڈھیرسارے سوالات کا جواب دینے کیلئے جمعیت علما ہند کے ریاستی صدر مولانا افتخار احمد قاسمی حاضر ہوئے ۔

پروگرام کے کنوینراور کرناٹک ہائی کورٹ کے سینئر ایڈوکیٹ ایوب احمد خان نے کئی موضوعات پرمولانا سے سوالات پوچھے۔ ایک سوال یہ بھی تھا کہ مسلم طبقہ میں ایسےافراد موجود ہیں جو سمجھتے ہیں کہ ہندوستان میں شریعت کی پابندی ضروری نہیں۔ ٹیکس چوری،رشوت خوری اس طرح کے جرائم کو مذہبی نقط نظرسے گناہ نہیں سمجھتے۔ مولانا نے کہاکہ مذہب اسلام ملک کے قوانین کی خلاف ورزی کرنے کی ہرگزاجازت نہیں دیتا۔ ہندوستان دارالامن ہے۔ یہاں مسلمانوں کے اپنے شریعت کے مطابق زندگی گذارنے کی مکمل آزادی ہے۔ بعض مسائل مسلمانوں نے اپنی کوتاہی اور غفلت سے کھڑے کئے ہیں۔

ہندوستان دارالامن ، ملک کے قوانین کی خلاف ورزی کی اجازت نہیں دیتا ہے اسلام : مولانا افتخار احمد قاسمی

ہندوستان دارالامن ، ملک کے قوانین کی خلاف ورزی کی اجازت نہیں دیتا ہے اسلام : مولانا افتخار احمد قاسمی

جنتا کی عدالت میں برقعہ، حجاب،نقاب کے موضوع پر بھی مولانا سےکئی سوالات پوچھےگئے۔ مولانا نے کہا کہ اسلام میں برقعہ کا حکم نہیں ہے بلکہ پردہ کا حکم ہے۔ پردہ ایسا ہو جس سے عورت کا وجود چھپ جائے۔پروگرام میں مولانا کی نجی زندگی کے متعلق بھی سوالات پوچھے گئے۔ مولانانے اس شبہ کو بھی مسترد کردیا کہ کسی کمپنی سے انہیں موٹی رقم ملی تھی۔

بنگلورو کے دانشوروں کی تنظیم ویژن کرناٹک وقتا فوقتا جنتا کی عدالت منعقد کرتی ہوئی آرہے ہیں۔ اس تنظیم نے سیاستدانوں کے علاوہ علما کوبھی مدعو کرنے کا سلسلہ شروع کیاہے۔ ویژن کرناٹک کے سرپرست غلام غوث نے کہاکہ جمعیت علما کے بعد جمعیت اہل حدیث،سنی جماعت اور دیگر مکتب فکر کے علما کو جنتا کی عدالت میں مدعو کیاجائےگا۔

Loading...

تنظیم کے جوائنٹ کنوینر مختاراحمد نے کہاکہ جنتا کی عدالت کا مقصد اقلیتوں کے مسائل کوسیاسی نمائندوں کے روبرو پیش کرنا،عوامی نمائندوں کو جوابدہ بنانا ہے۔ ساتھ ہی ملت میں اتحاد،اتفاق کوفروغ دیناہے۔

پروگرام میں تبلیغی جماعت میں پیدا ہوئے اختلافات پر بھی بحث ہوئی۔ مولانا افتخاراحمد قاسمی نے جماعت کے بڑے علما سےاپیل کی کہ وہ اندرونی اختلافات کوسُلجھا لیں تاکہ ملت میں اتحاد اور اتفاق قائم رہے۔

Loading...