اب ایک لاکھ 20 ہزار سالانہ آمدنی والے خاندان کو مل سکتا ہے بی پی ایل کارڈ

Apr 05, 2017 07:47 PM IST | Updated on: Apr 05, 2017 07:47 PM IST

بنگلورو۔ کرناٹک میں راشن کارڈ کی شرائط میں تبدیلی کی گئی ہے۔ حکومت کےاس نئےاقدام سے بڑی تعداد میں اقلیتوں کو بھی فائدہ پہنچ سکتا ہے۔ بنگلورو میں اردورپورٹرس فورم کے تحت منعقدہ کیمپ میں محکمہ فوڈ اینڈ سیول سپلائی کے افسروں نےیہ بات بتائی ۔ بنگلورو کے گلستان شادی محل میں کرناٹک اردو رپورٹرس فورم کےتحت راشن کارڈ کیمپ منعقد ہوا۔ اس کیمپ میں اردو اخباروں اور ٹی وی چینلوں میں کام کرنےوالےعملے کے لیے راشن کارڈ بنوائے گئے۔ محکمہ تغذیہ اور شہری رسدات کے افسروں نے کہا کہ راشن کارڈ کی شرائط میں حکومت نے تبدیلی کی ہے۔ بی پی ایل کارڈ کو پی پی ایچ  جبکہ اے پی ایل کارڈ کواین پی پی ایچ کارڈ میں تبدیل کیاگیا ہے۔ شہروں میں رہنے والےغریب خاندانوں کے لیےسالانہ آمدنی کی شرط 17ہزارروپئےتھی لیکن اب ایک لاکھ 20ہزارسالانہ آمدنی والے خاندانوں کوبی پی ایل کارڈ کی سہولت ملےگی۔

کرناٹک اردورپورٹرس فورم کےتحت ہوئےاس کیمپ سےتقریباً 200خاندانوں کےراشن کارڈ بنوائے گئے۔ کرناٹک میں پی پی ایچ کارڈوں کے ذریعہ مفت اناج، مفتی طبی سہولیات ، تعلیمی مراعات حاصل ہیں۔ محکمہ تغذیہ کے افسروں نے اپیل کی ہےکہ ایک لاکھ  20 ہزارسالانہ آمدنی والے خاندان حکومت کی اس سہولت کا فائدہ اُٹھائیں۔

اب ایک لاکھ 20 ہزار سالانہ آمدنی والے خاندان کو مل سکتا ہے بی پی ایل کارڈ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز