بابا بڈھن گری درگاہ کے مزار پر ضلع انتظامیہ نے صندل چڑھانے کی نہیں دی اجازت

Mar 15, 2017 08:19 PM IST | Updated on: Mar 15, 2017 08:19 PM IST

چک منگلور۔ کرناٹک کے ساحلی علاقے چک منگلور میں واقع بابا بڈھن گری کا صندل و عرس منایا گیا ـ تقریب میں ہزاروں کی تعداد میں عقیدتمند  شریک ہوئےـ ضلع انتظامیہ کی طرف سے صندل چڑھانے کی اجازت نہ ملنے پر لوگوں نے صندل کا ہی بائکاٹ کردیا ـ درگاہ میں کل سے ہی صندل وعرس تقریب شروع ہوگئی ـ نہ صرف کرناٹک بلکہ بیرونی کرناٹک سے بھی ہزاروں عقیدتمند یہاں جمع ہوئے ہیں ـ ضلعی انتظامیہ کی طرف سے صندل چڑھانے کی اجازت نہ ملنے پر تمام عقیدتمندوں نے غم و غصہ کا اظہار کیا ہے ـ

بابا بڈھن گری درگاہ کے مزار پر ضلع انتظامیہ نے صندل چڑھانے کی نہیں دی اجازت

چک منگلور ضلع میں واقع بابا بڈھن گری درگاہ کاعرس و صندل عالیشان پیمانے پر منایا گیا ـ درگاہ کے صدرنشین کی قیادت میں منعقدہ تین روزہ تقریب کے پہلے ہی دن ہزاروں کی تعداد میں عقیدت مند شریک رہے ـ علاقے کا گشت کرتا ہوا صندل جب درگاہ شریف پہنچنے ہی والا تھا کہ ضلعی انتظامیہ نے صندل چڑھانے اور غلاف ڈالنے کی اجازت نہیں دی  اور نہ ہی کسی کو غار میں موجود درگاہ کے اندر داخل ہونے کی اجازت دی ـ ضلعی انتظامیہ کے اس فیصلہ سے برہم ہوکر درگاہ کے صدرنشین اور ان کے عقیدتمندوں نے درگاہ کے قریب ہی فاتحہ خوانی کی اور واپس چلے گئے ـ اس دوران نہ صرف درگاہ بابا بڈھن گری کے ذمہ داران بلکہ ہزاروں عقیدتمندوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ہرسال کی طرح اس سال بھی انہیں مزار شریف پر صندل چڑھانے کی اجازت دی جائے ـ

صدر سید غوث محی الدین نے بتایا کہ ضلعی انتظامیہ  نے ہمیں صندل چڑھانے کی اجازت نہیں دی جس کی وجہ سے ہم اس سال صندل کا بائیکاٹ کرکے واپس جا رہے ہیں ـ حالانکہ سپریم کورٹ نے صندل چڑھانے کی اجازت دے دی ہے اس کے باوجود ہمیں اس بار صندل چڑھانے کا موقع نہیں دیا جارہا ہے ـ انہوں نے کہا کہ سال 2005 میں جس طرح عالیشان پیمانے پر یہاں عرس منایا گیا تھا وہی منظر آج بھی دکھائی دے رہا ہے ـ اس کے باوجود ضلعی انتظامیہ ہمیں صندل چڑھانے کا موقع فراہم نہیں کررہی ہے ـ ہم حکومت سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ ہمیں درگاہ شریف پر صندل چڑھانے کی اجازت دے ـ

ری کمنڈیڈ اسٹوریز