کنٹریکٹ شادی: پرانا شہر حیدرآباد سے آٹھ عرب شہری گرفتار

Sep 20, 2017 04:09 PM IST | Updated on: Sep 20, 2017 04:09 PM IST

حیدرآباد۔  حیدرآباد پولیس نے شادیوں کے ایک گروہ کو بے نقاب کرتے ہوئے 17افراد بشمول 8 عرب شہریوں جن کا تعلق سعودی عرب ‘ عمان اور قطر سے ہے ‘ کے علاوہ دیگر 4 افراد کو شادی کے نام پر معصوم لڑکیوں کو دھوکہ دینے کے الزام میں گرفتار کرلیا۔ بتایا جاتا ہے کہ عرب ممالک سے یہ شیوخ نابالغ لڑکیوں سے کنٹریکٹ میریج کے لئے حیدرآباد پہنچے تھے۔ پولیس نے بتایا کہ 4لاج کے مالکین اور 5بروکرس کو بھی حیدرآباد کے پرانے شہر سے گرفتا رکیا گیا۔

عرب شیوخ نے کنٹریکٹ کی بنیاد پر فلک نما اور چندرائن گٹہ کے علاقہ میں دو نابالغ لڑکیوں سے شادی کی تھی۔ قبل ازیں ممبئی کے صدر قاضی فرید احمد خان کو پولیس نے پیر کو حراست میں لیا تھا۔ پوچھ تاچھ کے دوران پتہ چلا کہ وہ نابالغ لڑکی کے میریج سرٹیفیکیٹ کی فراہمی میں ملوث ہے۔

کنٹریکٹ شادی: پرانا شہر حیدرآباد سے آٹھ عرب شہری گرفتار

آٹھویں کلاس کی لڑکی کے ساتھ ایک شیخ

اس نابالغ لڑکی سے عمان کے شہری نے شادی کی تھی اور اسے اپنے ساتھ لے کر گیا تھا۔ اس قاضی کی جانب سے جاری کردہ میریج سرٹیفیکیٹ کی بنیاد پر اس لڑکی کا ویزا حاصل کرنے میں مدد ملی تھی۔ پولیس نے حیدرآباد میں اس طرح کی کنٹریکٹ شادیوں کے کئی واقعات کا حالیہ چند دنوں میں پتہ لگایا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز