کرونا ندھی کی مرینا بیچ پرہوئی تدفین، لاکھوں سوگواروں نے اپنے محبوب لیڈرکونم آنکھوں سے کہا الوداع

سابق وزیراعلیٰ اور ڈی ایم کے سربراہ ایم کروناندھی کو چنئی کے مرینا بیچ (ساحل) پر تدفین ہوگئی ہے۔ انہیں ان کے سیاسی گرو انا درائی کے قریب دفن کیا گیا ہے۔

Aug 08, 2018 09:00 PM IST | Updated on: Aug 08, 2018 09:00 PM IST

سابق وزیراعلیٰ اورڈی ایم کے سربراہ ایم کروناندھی کو چنئی کے مرینا بیچ (ساحل) پرتدفین ہوگئی ہے۔ انہیں ان کے سیاسی گرو انا درائی کے قریب دفن کیا گیا ہے۔ آخری رسوم ادائیگی سے قبل مرینا بیچ کے لئے راجا جی ہال سے ان کی لاش نکالی گئی، جس میں لاکھوں کی تعداد میں لوگ شامل ہوئے۔ حامیوں نے نم آنکھوں سے اپنے کلیگ نارکوالوداع کہا۔

کرونا ندھی کے آخری رسوم میں کئی ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ اورلیڈرشامل ہوئے تھے۔ کانگریس صدر راہل گاندھی، کرناٹک کے وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی، کیرلا کے وزیراعلیٰ پنارائی وجین، تلنگانہ کے وزیراعلی کے چندرشیکھر راو، سی پی ایم کے جنرل سکریٹری پرکاش کرات، کیرلا کے سابق وزیراعلیٰ اومان چانڈی اوراترردیش کے سابق وزیراعلیٰ اکھلیش یادو سمیت کئی دیگر لیڈروں نے کرونا ندھی کوخراج عقیدت پیش کیا۔

کرونا ندھی کی مرینا بیچ پرہوئی تدفین، لاکھوں سوگواروں نے اپنے محبوب لیڈرکونم آنکھوں سے کہا الوداع

تمل ناڈو کے سابق وزیراعلیٰ ایم کرونا ندھی: نیوز 18 اردو

Loading...

کیرلا کے گورنر پی سداشیوم، وزیراعلیٰ وجین اور اپوزیشن لیڈررمیش چینیتھلا کے ساتھ راجا جی ہال میں خراج عقیدت دینے پہنچے۔ سابق وزیراعلیٰ چانڈی نے کہا  "وہ ہمارے ملک کے ایک عظیم لیڈراوربہت اچھے منتظم تھے۔ جب وہ وزیراعلیٰ تھے، تب وہ کیرلااورکیرلا کے باشندوں کا خیال رکھتے تھے۔ ہمارے ساتھ رہے اچھے تعلقات کو میں یاد کرتا ہوں"۔

تمل فلم انڈسٹری کے لوگوں نے بھی اس آنجہانی لیڈرکو نم آنکھوں سے خراج عقیدت پیش کیا۔ پیریارای وی راما سوامی کے انتقال کے بعد تب کروناندھی کے ذریعہ لکھی گئی ایک نظم کو نامہ نگاروں کے سامنے پیش کرتے وقت رائٹراورگلوکارویرا متھوروپڑے۔ انہوں نے کہا کہ کیا ہم تاج محل کے انہدام کو صرف اس لئے قبول کرسکتے ہیں کہ اس کی تعمیر قدیم ہے؟ وہی جوکرونا ندھی نے پیریارکے انتقال پر لکھا تھا، ہم اس حقائق کو قبول نہیں کرپارہے ہیں کہ کلائینگ ناراب نہیں رہے"۔

اس سے قبل مدراس ہائی کورٹ  نے تمل ناڈو کے سابق وزیراعلیٰ اورڈی ایم کے سربراہ ایم کرونا ندھی کی آخری رسوم ادائیگی چنئی کے مشہور مرینا بیچ پر کرنے کی اجازت دے دی۔ اس دوران راجا جی کے باہر بھگدڑہونے سے دو لوگوں کی موت ہوگئی ہے جبکہ 40 لوگں کے زخمی ہونے کی اطلاع ملی ہے۔ ہائی کورٹ کا یہ فیصلہ سنتے ہی راجا جی ہال کے باہر جمع ہزاروں ڈی ایم کے  کارکنان میں خوشی کی لہردوڑگئی۔ وہیں کروناندھی کے بیٹے اوران کے سیاسی وارث اسٹالن کی آنکھوں سے آنسو چھلک گئے۔

واضح رہے کہ منگل کو طویل علالت کے بعد چنئی کے کاویری اسپتال میں کرونا ندھی کا انتقال ہوگیا۔ یورنری ٹریکٹ انفکشن (یو ٹی آئی) سے متاثرہ 94 سالہ ایم کرونا ندھی کو کچھ دن پہلے ہی اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ پانچ بار تمل ناڈو کے وزیراعلیٰ اور 12 باراسمبلی  کے رکن رہے ڈی ایم کے سربراہ کرونا ندھی بھی ایک اہم شخص تھے۔ ہندوستانی سیاست میں کرونا ندھی ایک الگ ہی شناخت رکھتے تھے۔ ان کے مداح انہیں کلائی نار کہہ کر بلاتے تھے، اس کا مطلب ہوتا ہے تمل آرٹ کا ماہر۔

کرونا ندھی  نے پہلی بار 1969 میں وزیراعلیٰ کا حلف لیا تھا۔ 1969 میں ڈی ایم کے کے بانی سی این انادرئی کی موت کے بعد سے کرونا ندھی کے ہاتھ میں پارٹی کی کمان تھی۔ کرونا ندھی کو تروچراپلی ضلع کے کلیاتھلائی اسمبلی سے 1957 میں تمل ناڈو اسمبلی کے لئے پہلی بار منتخب کیا گیا تھا۔  1961 میں وہ ڈی ایم کے کے خازن بنے اور 1962 میں ریاستی اسمبلی میں اپوزیشن کے ڈپٹی لیڈر بنے۔ 1967 میں ڈی ایم کے جب اقتدار میں آئی تب کروناندھی عوامی امور کے وزیر بنے۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز