گئو رکشکوں کی وجہ سے کیرالہ میں سفید انقلاب کو خطرہ لاحق ، وزیر افزائش مویشیاں کا اعتراف

Sep 24, 2017 08:02 PM IST | Updated on: Sep 24, 2017 08:02 PM IST

تھرواننت پورم: کیرل کے وزیر افزائش مویشیاں نے آج کہا کہ ریاست میں سفید انقلاب یعنی دودھ کی خود مکتفی پیداوار کے منصوبہ کوگئو رکشکوں سے خطرہ لاحق ہے۔ ریاست کے وزیر برائے جنگلات‘ افزائش مویشیاں و چڑیا گھر کے راجو نے کہا کہ کیرل میں دودھ کی پیداوار میں اضافہ کی اپنی کوششوں کے حصہ کے طور پر غیر نسل کے حصول کا منصوبہ بنایا تھا۔ نہ صرف گجرات بلکہ دیگر ریاستوں سے بھی گائیوں کی خریدی کا معاملہ تحفظ گاؤ کے نام پر ہجومی تشدد کے امکانی خطرہ کی وجہ سے کھٹائی میں پڑ گیا ہے تاہم گجرات سے غیر نسل کی گائیں خریدنے کا منصوبہ ہم نے ترک نہیں کیا ہے۔ اس پر ہم اب بھی سنجیدگی سے غور کررہے ہیں تاہم گایوں کی منتقلی کے جوکھم کی وجہ سے فی الحال اس کو ملتوی کردیا گیا ہے۔

دودھ کی وافر پیداوار کے لئے شہرت رکھنے والی غیر نسل کی گائیں گجرات کے سوراشٹر علاقہ کے غیر جنگلاتی علاقہ اور اطراف کے اضلاع میں بکثرت پائی جاتی ہیں۔ راجو نے کیرل نے فی کس ایک لاکھ روپئے مالیت پر مشتمل 200 گائیں خریدنے کا منصوبہ بنایا ہے۔ انہوں نے حال ہی میں گجرات کا دورہ بھی کیا اور متعلقہ وزیر سے ملاقات کرتے ہوئے اس منصوبہ پر تبادلہ خیال کیا۔ گجرات کے حکام نے منصوبہ پر مثبت رد عمل دیا اور کہا کہ گایوں کی دستیابی بھی کوئی مسئلہ نہیں ہے۔

گئو رکشکوں کی وجہ سے کیرالہ میں سفید انقلاب کو خطرہ لاحق ، وزیر افزائش مویشیاں کا اعتراف

گیٹی امیجیز

وزیر موصوف نے کہا کہ ہمارا منصوبہ تھا کہ دیہاتوں کو جاکر وہاں سے گائیں راست طور پر کسانوں سے خریدی جائیں لیکن اصل مسئلہ وہاں سے کیرل کو مویشیوں کی منتقلی کا ہے۔ انہوں نے کہا کہ گجراتی حکام نے ریاست کی سرحد تک گائیوں کے محفوظ منتقلی کا یقین دلایا ہے لیکن وہاں سے کیرالا پہنچنے سے قبل مہاراشٹرا کے بشمول دیگر ریاستوں کا سفر کرنا پڑتا ہے اور فی الحالگئو رکشکوں کی موجودگی سے متعلق رپورٹس کے پیش نظر گائیوں کے ساتھ اتنا طویل فاصلہ طئے کرنا خطرہ سے خالی نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس خطرہ کے باوجود ریاستی حکومت پراجکٹ کو آگے بڑھ جانے کی متمنی ہے اور اس سلسلہ میں بہت جلد مناسب قدم اٹھایا جائے گا۔ وزیر موصوف نے کہا کہگئو رکشکوں کی وجہ سے کیرل میں دودھ کی پیداوار میں اضافہ مشکل ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں مویشی پالن پر لاکھوں عوام کا گزر بسر ہوتا ہے۔ گئو رکشکوں کی دہشت کی وجہ سے ان کی معاش پر بھی اثر پڑا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز