طلاق ثلاثہ پرسیاست نہ کرے مرکزی حکومت: پرسنل لا بورڈ کی شعبہ خواتین کی وارننگ

مسلم پرسنل لا بورڈ کی خواتین نے کہاکہ مسلم سماج بھی ایک نشست میں تین طلاق کی تائید نہیں کرتا، لیکن اسے بہانہ بنا کرشریعت میں مداخلت کرنا درست نہیں۔

Oct 08, 2018 10:07 PM IST | Updated on: Oct 08, 2018 10:13 PM IST

بنگلورو میں آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے شعبہ خواتین کی ارکان نے  بنگلورو کے آڈم ہریٹیج ہاوز میں ہوئی پریس کانفرنس میں کہا کہ مرکزی حکومت طلاق ثلاثہ کی آڑ میں خواتین کے ڈھیرسارے مسائل پرپردہ ڈال رہی ہے۔  شعبہ خواتین کی ارکان نے کہاکہ مسلم سماج بھی ایک نشست میں تین طلاق کی تائید نہیں کرتا، لیکن اسے بہانہ بنا کرشریعت میں مداخلت کرنا درست نہیں۔

آل انڈیا مسل پرسنل لا بورڈ شعبہ خواتین کی کوآرڈینیٹرڈاکٹرآصفہ نثاراوربورڈ کی  خواتین ارکان تسلیم شاہ جہاں، جویریہ اور تسلیم فرزانہ نے مشترکہ پریس کانفرنس میں  طلاق ثلاثہ پر آرڈیننس جاری کرنے کومحض سیاسی قدم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ مرکزی حکومت طلاق کے مسئلے پرسیاست کررہی ہے، لہٰذا ہم کہنا چاہتے ہیں کہ شریعت میں کسی بھی قسم کی مداخلت نہ کی جائے کیونکہ ہمیں یہ ہرگز منظور نہیں ہے۔ 

طلاق ثلاثہ پرسیاست نہ کرے مرکزی حکومت: پرسنل لا بورڈ کی شعبہ خواتین کی وارننگ

آل انڈیا مسلم پرسنل لابورڈ کی شعبہ خواتین کی ارکان بنگلور میں طلاق ثلاثہ آرڈیننس پرپریس کانفرنس کے دوران۔

بورڈ کی خواتین نے  کہاکہ اس مسئلہ پرمرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ سے بھی ملاقات کی گئی، لیکن اس کے باوجود مرکزی حکومت آرڈیننس پاس کرتے ہوئے مسلمانوں کے جذبات کے ساتھ کھیل رہی ہے۔ اس کے علاوہ مرکزی حکومت نے کسی بھی مسلم تنظیم  کی بات کو مدنظر نہیں رکھا۔

بنگلور سے روف رضا کی رپورٹ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز