علامہ اعجاز فرخ کی حیدرآباد کی تہذیبی تاریخ پر کتاب مرقع حیدرآباد کی رسم اجرا

اپنی مخصوص طرز نگارش اوراسلوب کیلئے منفرد ممتاز مصنف علامہ اعجاز فرخ نے اپنی نئی کتاب کیلئے حیدرآباد کی تہذیبی تاریخ کو موضوع بنایا ہے ۔

Sep 19, 2017 10:55 PM IST | Updated on: Sep 19, 2017 10:55 PM IST

حیدرآباد : اپنی مخصوص طرز نگارش اوراسلوب کیلئے منفرد ممتاز مصنف علامہ اعجاز فرخ نے اپنی نئی کتاب کیلئے حیدرآباد کی تہذیبی تاریخ کو موضوع بنایا ہے ۔ ’ مرقع حیدرآباد ‘ کے نام سے لکھی گئی اس کتاب میں قلی قطب شاہ کے ابتدا سے لے کر پانچویں نظام نواب میر محبوب علی خان کے دورتک کا احاطہ کیا گیا ہے ۔ حیدرآباد میں منعقدہ اس کتاب کی رسم اجرا کی تقریب اس لحاظ سے تاریخی رہی کہ اس کے ذریعہ شہرکی نئی نسل کو اپنی تہذیبی تاریخ کو جاننے کا موقع ملے گا ۔

مرقع حیدرآباد کا اجرا تلنگانہ کے ڈپٹی چیف منسٹرمحمد محمود علی نے کیا ۔ اس موقع پر سکندرآباد کے ممبر پارلیمنٹ بنڈارو دتاتریہ بھی موجود تھے۔ علاحدہ ریاست تلنگانہ کے قیام اور حیدرآباد کی تہذیبی تاریخ کو جاننے کے بارے میں میں عوام کی بڑھتی دلچسپی کے مدنظر محکمہ اقلیتی بہبود نے ’ مرقع حیدرآباد ‘ کو انگریزی اور تیلگو زبانوں میں بھی ترجمہ کرواکر شائع کرنے کا اعلان کیا ۔

علامہ اعجاز فرخ کی حیدرآباد کی تہذیبی تاریخ پر کتاب مرقع حیدرآباد کی رسم اجرا

کتاب ’ مرقع حیدرآباد ‘ میں اس کے مصنف علامہ اعجاز فرخ نے اس میں دکن کی رنگا رنگ تہذیب کے مختلف اجزا یعنی یہاں کی تقاریب شادی بیاہ ، عید تہوار ،مروت وضع داری، مہمان نوازی ، لباس ، زیور اور پکوان کی تاریخ کو سمویا ہے ۔ حیدرآباد یوں کو جہاں اس بات کی خوشی ہے کہ ان کی تہذیبی تاریخ کو با ضا بطه رقم کرتے ہوئے اسے کتابی شکل میں پیش کیا گیا ہے ، بلکہ انھیں اس بات کی اور زیادہ خوشی ہے کہ اس کتاب کو اس دور کے سب سے قابل ترین سپوط علامہ اعجاز فرخ نے مرتب کیا ہے ۔

اس موقع پر اکیڈمی نے اعلان کیا کہ میرعثمان خان کے دور حکومت سے لے کر موجودہ دور کی تہذیبی تاریخ پرمشتمل کتاب کے دوسرے حصہ کو بھی بہت جلد پیش کیا جائے گا ۔ علامہ اعجاز فرخ کی اس کتاب ’ مرقع حیدرآباد ‘ کو تلنگانہ اسٹیٹ اردواکیڈمی نے شائع کیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز