بنگلورو میں مسجد سبحانیہ کمیٹی نے قائم کی مثال، مسجد کے قریب واقع اردواسکول کو لیا گود

Feb 03, 2017 07:21 PM IST | Updated on: Feb 03, 2017 07:21 PM IST

بنگلورو۔ بنگلورو کی مسجد سبحانیہ کمیٹی نے ایک مثال قائم کی ہے۔ اس کمیٹی نے سرکاری اردو اسکول کوگود لیکر اسکول کو ترقی کی راہ پرلے جانے کی کامیاب کوشش کی ہے۔ عام طورپر سرکاری اردو اسکولوں کے اطراف مساجد  ہوتی ہیں۔ سُبحانیہ کمیٹی کےارکان کہتے ہیں کہ اگرمسجد کمیٹیاں اپنےکام کاج کےساتھ اردواسکولوں کی نگرانی کریں تواردو زبان اور اردوتعلیم کوضرور بہ ضرورفروغ ملے گا۔

بنگلورو کے پادرائن پورہ میں واقع سرکاری اردو اسکول کبھی جھونپڑی کی شکل میں تھا ۔ اس اسکول کا کوئی پرسان حال نہ تھا۔ بچوں کی تعداد بھی کافی کم تھی ۔ لیکن دس سال پہلے اسکول کےقریب واقع سبحانیہ مسجد کمیٹی نے اسکول کوگود لے لیا ۔ سب سے پہلے اسکول کے لیےکثیرالمنزلہ نئی عمارت تعمیرکروائی۔ اسکول کی مکمل نگرانی کے ساتھ تعلیمی معیار کوبڑھانےکی مسلسل کوشش کی گئی۔ نتیجہ یہ ہوا کہ چند ہی سالوں میں یہ اسکول ترقی کی جانب اپنا سفر شروع کر دیا۔ فی الوقت یہاں 800 سےزائد طلبا نرسری سے لیکر آٹھویں جماعت تک کی تعلیم حاصل کررہےہیں ۔ بنگلورو ساؤتھ کے تمام اردواسکولوں میں سب سے زیادہ بچوں کی تعداد اس اسکول میں موجود ہے۔

بنگلورو میں مسجد سبحانیہ کمیٹی نے قائم کی مثال، مسجد کے قریب واقع اردواسکول کو لیا گود

انگریزی اسکولوں کے غلبہ کی وجہ سے کرناٹک کے اردواسکولوں میں بچوں کی تعداد دن بدن گھٹتی جارہی ہے۔ کئی اردواسکول بند ہونے کے دہانے پرہیں۔ ان حالات میں اردو اسکول کو بچانے اوراسے ترقی کی راہ پر لے جانے کی  مسجد سُبحانیہ کمیٹی کی یہ کوشش قابل ستائش کہی جاسکتی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز