مسلمانوں نے مسلم پرسنل لا کا غلط استعمال کیا : علمائے کرام

جماعت اسلامی ہند نے گلبرگہ میں ’’مسلم پرسنل لا ۔ موجودہ صورتحال اور ہماری ذمہ داریاں‘‘ کے عنوان سے اجلاس عام کا انعقاد کیا۔

May 02, 2017 04:02 PM IST | Updated on: May 02, 2017 04:02 PM IST

گلبرگہ ۔ علمائے کرام کا کہنا ہے کہ مسلم پرسنل لا پر منڈلاتے خطرے کے بادل مسلمانوں کے ہی اعمال کا نتیجہ ہیں۔ علما کا کہنا ہے کہ مسلمانوں نے مسلم پرسنل لا کا غلط استعمال کیا جس کی وجہ سے آج اس پر انگلیاں اٹھائی جا رہی  ہیں۔ طلاق اور وراثت میں شریعت  کی پاسداری نہ کرنےسے عورتیں اسلام سے بیزار  ہو رہی ہیں ۔ گلبرگہ میں منعقدہ ایک جلسے میں علما نے مسلمانوں کو اپنا احتساب کرنے کا مشورہ دیا۔  اس اجلاس میں  تمام مکاتب فکر کے علما کرام کو  خطاب کی دعوت دی گئی ۔  امیر حلقہ اطہر اللہ شریف نے اجلاس کی صدارت کی ۔

جماعت اسلامی ہند نے گلبرگہ میں ’’مسلم پرسنل لا ۔ موجودہ صورتحال اور ہماری ذمہ داریاں‘‘ کے عنوان سے اجلاس عام کا انعقاد کیا۔  اجلاس میں مقررین نے زور دے کر کہا کہ  مسلم پرسنل لا، اسلامی قانون ہے۔ پرسنل لا شریعت کا حصہ اور شریعت وحی اور حدیث کی روشنی میں مرتب ہے ۔ جس میں ترمیم نا قابل قبول ہے۔ مقررین نے موجودہ صورتحال کیلئے مسلمانوں کو ہی ذمہ دار قرار دیا۔ علما ئے کرام نے کہا کہ مسلمان طلاق، وراثت جیسے موضوعات پرشریعت کی پاسداری کرتے تو ایسا ماحول پیدا نہیں ہوتا ۔  مقررین نے حکومت کی نیت پر بھی سوال اٹھائے۔ مقررین نے کہا کہ حکومت اگر مسلم خواتین کے تعلق سے سنجیدہ ہے تو صحیح سمت میں انکی فلاح کیلئے اقدامات اٹھائے۔ مسلم پرسنل لا کے تعلق سے جماعت اسلامی ہند کی کل ہند مہم کے تحت اس جلسہ عام کا انعقاد کیا گیا تھا۔

مسلمانوں نے مسلم پرسنل لا کا غلط استعمال کیا : علمائے کرام

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز