کرناٹک الیکشن: بی جے پی نے مسلم علاقوں میں لگائی سیندھ، کانگریس کو اٹھانا پڑا نقصان

May 16, 2018 01:23 PM IST | Updated on: May 16, 2018 01:23 PM IST

بنگلورو۔ کرناٹک انتخابات میں مسلم اکثریتی 17 نشستوں پر بی جے پی نے اس بار چھ سیٹوں پر جیت درج کی ہے جبکہ اس سے پہلے 2013 میں اسے صرف 3 نشستیں ملی تھیں۔ اس بار بی جے پی کو 3 مزید نشستوں کا فائدہ ہوا۔ وہیں اس بار کانگریس کے کھاتے میں 10 سیٹیں ہی آئی ہیں۔ جبکہ 2013 میں اسے 11 سیٹیں ملی تھیں یعنی اس بار کانگریس کو 1 سیٹ کا نقصان ہوا۔

کانگریس کے بعد مسلمانوں کے لئے متبادل کے طور پر دیکھی جا رہی جے ڈی ایس  اس بار صرف ایک ہی سیٹ جیت پائی۔ جبکہ 2013 میں اس کے کھاتے میں 2 نشستیں آئی تھیں، یعنی اس بار جے ڈی ایس کو بھی ایک سیٹ کا نقصان اٹھانا پڑا۔ اس کے علاوہ ان سیٹوں پر بقیہ لوگوں کا تو کھاتہ بھی نہیں کھلا جبکہ 2013 میں ان کے حصے میں بھی ایک نشست آئی تھی۔

کرناٹک الیکشن: بی جے پی نے مسلم علاقوں میں لگائی سیندھ، کانگریس کو اٹھانا پڑا نقصان

کرناٹک کی ان 17 نشستوں پر مسلم سوسائٹی سے منسلک ووٹر مؤثر ثابت ہوئے ہیں۔ لیکن اس بار کرناٹک کے انتخابی مساوات کے ساتھ ہندوتو کا بھی مسئلہ چھایا رہا۔ اس کی وجہ سے بی جے پی پولرائزیشن کے سہارے مسلم اثرات والی بہت سی نشستیں جیتنے میں کامیاب رہی ہے۔

کرناٹک کی 18 نشستوں پر مسلم کمیونٹی کے ووٹر فیصلہ کن کردار ادا کرتے رہے ہیں۔ 2013 کے اسمبلی الیکشن میں 18 نشستوں میں 11 سیٹوں پر مسلم ووٹرز نے کانگریس امیدواروں کو ہی الیکشن میں جیت دلائی تھی۔ بی جے پی نے بھی 4 نشستوں پر قبضہ کیا تھا۔

کانگریس کے بعد مسلمانوں کے لئے متبادل کے طور پر دیکھی جانے والی جے ڈی ایس صرف دو نشستیں ہی جیتنے میں کامیاب رہی۔ اس کے علاوہ ایک سیٹ دوسرے کے کھاتہ میں آئی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز