کرناٹک وقف بورڈ نے 800 ایکڑ زمین قبرستانوں کے لئے فراہم کرنے کی درخواست کی

May 06, 2017 08:29 PM IST | Updated on: May 06, 2017 08:29 PM IST

بنگلورو۔ ریاست کرناٹک کی کل آبادی 6 کروڑ25 لاکھ سے زائد ہے۔ ان میں مسلمانوں کی آبادی 13 فیصد ہے۔ کرناٹک ریاستی وقف بورڈ کے اندازے کہتے ہیں کہ ریاست میں قبرستانوں کی کل تعداد 5477 ہے ۔ پوری ریاست سے مزید 420 نئے قبرستانوں کے لیے درخواستیں آئی ہوئی ہیں ۔ ان درخواستوں کی بنیاد پر وقف بورڈ نے ریاست کے مختلف اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں سے 800 ایکڑ زمین قبرستانوں کے لئے فراہم کرنے کی درخواست کی ہے۔ نئےقبرستانوں کی تعمیر کے ساتھ موجودہ قبرستانوں کی حفاظت بھی ایک مسئلہ  ہے۔ کئی قبرستانوں کی زمین پرناجائزقبضے ہوئے ہیں۔ وقف بورڈ کے مطابق صرف30فیصد قبرستانوں اور عیدگاہوں کی حصاربندی ہوئی ہے۔ اس سال ریاستی حکومت نے بجٹ میں قبرستانوں کی حصاربندی کیلئے35کروڑروپئےفراہم کئےہیں ۔ وقف بورڈ کےافسران عوام سے اپیل کررہے ہیں کہ وہ اپنےعلاقوں میں عیدگاہوں اور قبرستانوں کی حفاظت کو یقینی بنائیں۔

ریاست کے حیدرآباد ۔ کرناٹک علاقہ میں مسلمانوں کی کثیرتعداد آباد ہے۔ یہاں کے تاریخی شہرگلبرگہ، بیدر، رائچور، یادگیر میں پرانے قبرستان موجود ہیں۔ بنگلورو کی طرح یہاں کے مسلمان بھی نئے قبرستانوں کا مطالبہ کر رہے ہیں ۔ رائچورشہر میں 10قبرستان موجود ہیں۔ مزید پانچ نئے قبرستانوں کے لیے زمین فراہم کرنے کا حکومت سے مطالبہ کیا جا رہا ہے۔ دوسری جانب بیدر ضلع میں تقریباً 250 قبرستان موجود ہیں جبکہ بیدر شہرمیں 12 قبرستان موجود ہیں ۔ یہاں کے لوگ بھی نئے قبرستانوں کی مانگ کررہے ہیں۔ حیدرآباد کرناٹک میں بھی نئےقبرستانوں کیلئےجگہ فراہم کرنےکی مانگ ہے۔ بنگلورو کے اہم علما کرام کہتے ہیں کہ شرعی طورپر پرانی قبروں کی جگہ پرنئی قبریں بنائی جا سکتی ہیں ۔ بنگلورو کے پرانے قبرستانوں میں جگہ نہ ہونے کے سبب یہی طریقہ اختیارکیا گیا ہے۔ لیکن حکومت کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ نئے قبرستانوں کے لئے زمین فراہم کرے ۔ ساتھ ہی ملت کا صاحب ثروت طبقہ بھی نئے قبرستانوں کے قیام کے لیے آگے آئے۔ علما ئے کرام مسلمانوں سے یہ بھی اپیل کررہے ہیں کہ وہ قبرستانوں میں پکی قبریں نہ بنائیں ۔

کرناٹک وقف بورڈ نے 800 ایکڑ زمین قبرستانوں کے لئے فراہم کرنے کی درخواست کی

بہرحال کرناٹک کے تقریبا ہرضلع میں نئے قبرستانوں کی ضرورت محسوس کی جا رہی ہے۔ ای ٹی وی نےاس مسئلہ کے سلسلے میں ریاست کے وزیرحج وشہری ترقیات آرروشن بیگ سے بات کی ۔ روشن بیگ نے کہا کہ اس مسئلہ  میں وزیراعلی سدرامیا سے گفتگو ہوئی ہے۔ وزیراعلی نے ترجیحی بنیاد پرمسئلہ کوحل کرنے کا یقین دلایا ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز