کیرالہ مبینہ لوجہاد کیس : ہادیہ کے والد نے کہا : بیٹی کا مسلمان بننا منظور ، مگر شفین سے شادی نہیں

Nov 02, 2017 10:52 PM IST | Updated on: Nov 02, 2017 10:52 PM IST

تھرواننت پورم : کیرالہ کے مبینہ لو جہاد معاملہ میں جہاں ایک طرف سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ 27 نومبر کو لڑکی ہادیہ کو عدالت میں پیش کیا جائے ، وہیں اب ان کے والد کا کہنا ہے کہ ان کی بیٹی کے اسلام قبول کرلینے سے انہیں کوئی اعتراض نہیں ہے ، بلکہ وہ شفین کے ساتھ شادی کے مخالف ہیں۔ ان کا کہا ہے کہ وہ بالکل بھی نہیں چاہتے ہیں کہ ان کی بیٹی شفین کے ساتھ رہے۔

ساتھ ہی ساتھ ہادیہ کے والد نے یہ بھی الزام لگایا کہ شفین دہشت گردانہ ذہنیت کا حامل شخص ہے ، میں اپنی بیٹی کو اس کی بیوی کے طور پر نہیں دیکھ سکتے ، اسے میرے گھر میں ہی مسلم کی طرح رہنے دیا جائے اور اگر وہ چاہے تو وہ کسی دوسرے مسلم نوجوان سے اس کی شادی کرنے دی جائے ۔ ہادیہ کے والد نے یہ بھی دعوی کیا کہ ان کے پاس شفین کے دہشت گردوں سے تعلق کے ثبوت بھی ہیں اور وقت آنے پر وہ اسے عدالت میں پیش کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنی بیٹی کو 27 نومبر کو عدالت کے سامنے پیش کریں گے ۔ کورٹ اس پر فیصلہ کرے گا۔

کیرالہ مبینہ لوجہاد کیس : ہادیہ کے والد نے کہا : بیٹی کا مسلمان بننا منظور ، مگر شفین سے شادی نہیں

خیال رہے کہ ایک کارکن راہل ایشورن سے بات چیت والے ویڈیو میں ہادیہ اپنی جان کی بھیک مانگتی ہوئی نظر آئی تھی ۔ ویڈیو میں اس نے اپنے والد پر زد و کوب کا الزام لگایا تھا ۔ ویڈیو پر اس کے والد نے کہا کہ یہ سب ہادیہ نے نہیں کہی بلکہ اس سے بلوایا گیا ہے ، مجھے شک کہ شفین نے ہی میری بیٹی کو یہ سب بولنے کیلئے کہا تھا ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز