کیرالہ مبینہ لو جہاد : میں ایک مسلمان ہوں ، کسی نے مجھ پر اسلام قبول کرنے کیلئے دباو نہیں ڈالا : ہادیہ

Nov 25, 2017 09:17 PM IST | Updated on: Nov 25, 2017 09:17 PM IST

کوچی : کیرالہ مبینہ لو جہاد کی زد میں پھنسی ہادیہ کا کہنا ہے کہ انہوں نے اپنی مرضی سے اسلام قبول کیا ہے اور کسی نے ان پر مشرف بہ اسلام ہونے کیلئے دباو نہیں ڈالا ہے ۔ قابل ذکر ہے کہ 23 نومبر کو این آئی اے نے اپنی اسٹیس رپورٹ سپریم کورٹ میں سونپ دی ہے اور عدالت عظمی اس معاملہ میں 27 نومبر کو سماعت کرے گی۔ اس دن ہادیہ کو انفرادی طور پر عدالت کے کمرے میں پیش کیاجائے گا۔

سپریم کورٹ میں پیش ہونے کیلئے نئی دہلی آنے کیلئے کوچی ائیرپورٹ پہنچی ہادیہ نے نامہ نگاروں سے بات چیت کی ۔ بات چیت کے دوران ہادیہ نے کہا کہ وہ ایک مسلمان ہیں اور کسی نے ان پر اسلام قبول کرنے کیلئے دباو نہیں ڈالا ہے ۔ ہادیہ نے مزید کہا کہ وہ اپنے شوہر کے ساتھ رہنا چاہتی ہے ۔ہادیہ سخت سیکورٹی کے درمیان کوچی سے روانہ ہوئی ۔ ان کے ساتھ ان کے والدین بھی ہیں ۔

کیرالہ مبینہ لو جہاد : میں ایک مسلمان ہوں ، کسی نے مجھ پر اسلام قبول کرنے کیلئے دباو نہیں ڈالا : ہادیہ

جمعہ کو ہادیہ کے شوہر شفین نے شکایت کی تھی کہ ہادیہ کو دوبارہ ہندو بنانے کیلئے کوشش کی جارہی ہے ۔ قابل ذکر ہے کہ عدالت نے گزشتہ 30 اکتوبر کو ہدایت دی تھی کہ هاديہ کو 27 نومبر کو کھلی عدالت میں بات چیت کے لئے پیش کیا جائے۔ خیال رہے کہ اكھلا نے تبدیلی مذہب کرنے کے بعد شیفین سے نکاح کیا تھا، جسے اشوكن نے کیرالہ ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔ ہائی کورٹ نے اس نکاح کو منسوخ کر دیا تھا، جسے شیفین نے سپریم کورٹ میں چیلنج کیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز