کٹھوعہ ریپ کیس : اسسٹنٹ منیجر نے لکھا " اچھا ہوا مر گئی " ، بینک نے نوکری سے نکالا

Apr 14, 2018 10:26 AM IST | Updated on: Apr 14, 2018 10:26 AM IST

ایک طرف جہاں پورا ملک کٹھوعہ میں آٹھ سال کی بچی کی اجتماعی آبروریزی اور قتل سے غصہ میں ہے ،  وہیں کئی ایسے لوگ بھی ہیں جو اس واقعہ پر صفائی پیش کررہے ہیں ۔ کیرالہ کے رہنے والے وشنو نند کمار نے فیس بک پر اس واقعہ کو لے کر انتہائی غیر سنجیدہ اور قابل اعتراض تبصرہ کیا ہے ۔

کوٹک مہندرا بینک کے کوچی میں واقع پلورتم برانچ میں اسسٹینٹ منیجر کے طور پر کام کررہے وشنو نے فیس بک پر لکھا کہ اچھا ہوا کہ وہ اس عمر میں ہی مر گئی ، نہیں تو بڑی ہوکر ہندوستان کے خلاف خود کش بمبار بن کر سامنے آتی ۔

کٹھوعہ ریپ کیس : اسسٹنٹ منیجر نے لکھا

وشنو کا یہ تبصرہ وائرل ہوگیا ، جس کے بعد بینک نے اسے اس کے عہدہ سے ہٹا دیا ہے ۔ بینک نے ایک بیان جاری کیا ہے کہ ہم نے وشنو نند کمار کو اس کی خراب کارکردگی کی وجہ سے گیارہ اپریل کو سروس سے برخاست کردیا ہے۔ ایسے سانحہ کے بعد ایسا تبصرہ انتہائی قابل افسوس ہے ۔ ہم اس بیان کی سخت مذمت کرتے ہیں۔

نند کمار کے تبصرہ کے بعد سوشل میڈیا پر لوگوں نے کافی سخت تبصرے کئے تھے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز