تلنگانہ: اقلیتی اقامتی اسکولوں میں یونیفارم اور دیگر انفراسٹرکچر کی کمی ، مکمل طور پرنہیں کیا گیا فراہم

تلنگانہ میں غریب بچوں کو مفت تعلیم فراہم کرنے کے لئے شروع کئے گئے اقلیتی اقامتی اسکولس میں یونیفارمس اور دیگر انفراسٹرکچر کا سامان مکمل طور پرفراہم نہیں کیاگیا۔

Jul 31, 2017 03:21 PM IST | Updated on: Jul 31, 2017 03:21 PM IST

حیدرآباد: تلنگانہ میں غریب بچوں کو مفت تعلیم فراہم کرنے کے لئے شروع کئے گئے اقلیتی اقامتی اسکولس میں یونیفارمس اور دیگر انفراسٹرکچر کا سامان مکمل طور پرفراہم نہیں کیاگیا۔ جاریہ سال دوہزار اسکولس کے من جملہ121 نئے اسکول کھولے گئے ہیں جن میں کئی اسکولس میں ڈریسس،بنچیس اور دیگر انفراسٹرکچر اب تک فراہم نہیں کیاگیاہے۔ اضافہ اسکولس اور گذشتہ سال کھولے گئے اسکولس میں کلاسس کے اضافے سے رہائش کا مسئلہ بھی پیداہوگیاہے۔

تلنگانہ بھر میں 27اسکولس ایسے ہیں جہاں پر بچوں کے رہائش کا مسئلہ پیداہورہاہے۔ اس سلسلے میں جب انتظامیہ سے پوچھا گیا تو بتایاگیا کہ نئے اسکولس کی عمارت میں کوئی مشکل نہیں ہے گذشتہ سال کے عمارتوں میں رہائش کا مسئلہ ہے جس کوایک مہینے کے اندر حل کرلیاجائے گا اورنئے اسکولس کی عمارت میں تعمیر کام جاری ہے۔ بہت جلد یہ بھی مکمل کیاجائے گا۔

تلنگانہ: اقلیتی اقامتی اسکولوں میں یونیفارم اور دیگر انفراسٹرکچر کی کمی ، مکمل طور پرنہیں کیا گیا فراہم

علامتی تصویر

انتظامیہ نے بتایاکہ 80فیصد اسکولس میں ڈریسس اور دیگر ضروری سامان پہونچادیاگیاہے۔ دس تا 15دن کے اندر تمام اسکولس میں انفراسٹرکچر فراہم کردیاجائے گا۔کام کرنے والے اہل کاروں کی تنخواہوں سے متعلق بھی کہا کہ ایجنسی کی تبدیلی کی وجہ سے تنخواہوں کی ادائیگی میں تاخیر ہوئی ہے۔ ایک یا دودن میں اس مسئلہ کو بھی حل کرلیا جائے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز