اسکالرشپ اسکیم کی آخری تاریخ میں توسیع سے اقلیتوں میں خوشی

رائچور۔ کرناٹک کے محکمہ اقلیتی بہبود کی جانب سے پری میٹرک، پوسٹ میٹرک اور میرٹ کم مینس اسکالرشپ کیلئے درخواست داخل کرنے کی آخری تاریخ میں پھر ایک بار توسیع کی گئی ہے ۔

Sep 05, 2017 08:25 PM IST | Updated on: Sep 05, 2017 08:25 PM IST

 رائچور۔ کرناٹک کے محکمہ اقلیتی بہبود کی جانب سے پری میٹرک، پوسٹ میٹرک اور میرٹ کم مینس اسکالرشپ کیلئے درخواست داخل کرنے کی آخری تاریخ میں پھر ایک بار توسیع کی گئی ہے ۔ آخری تاریخ میں توسیع سے طلباء اور سرپرستوں میں خوشی دیکھی جا رہی ہے وہیں دوسری طرف ماہرین تعلیم اور جانکار تاریخ میں توسیع کو نامناسب قرار دے رہے ہیں ۔ جب سے مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی جانب سے اسکالر شپ دینے کی اسکیم شروع ہوئی ہے ، اقلیتوں میں بچوں کو تعلیم دلانے کا رحجان بڑھا ہے اور یہ اسیکم غریب خاندانوں کیلئے کافی فائدہ مند ثابت ہورہی ہے ۔

 ریاست کرناٹک میں پری میٹر ک ،پوسٹ میٹر ک اور میرٹ کم مینس اسکالرشپ کیلئے درخواست داخل کرنے کی آخری تاریخ میں دوبار توسیع کی گئی۔  اس مرتبہ آخری تاریخ میں 30ستمبر تک توسیع عمل میں آئی ہے ۔ جانکاروں کا کہنا ہے کہ آخری تاریخ میں باربار توسیع ایک خوش آئند بات ہے لیکن بار بار توسیع سے طلباء کو وقت پراسکالر شپ نہیں مل پاتی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ گذشتہ سال کی اسکالر شپ طلبا ء کو جولائی اور اگست 2017میں دستیاب ہوئی تھی ۔ جس کی وجہ سے طلباء اور سرپرستوں کو مختلف دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا ۔ حکومت اگر داخلوں کے دوران اسکالر شپ فراہم کرے تو سرپرستوں کو آسانی ہوگی۔ سینٹرل مسلم ایسوسی ایشن شاخ رائچور کے صدر محمد عبداللہ اقبال منیار نے بتایا کہ مرکزی اور ریاستی سرکاری محکموں میں اسکالر شپ کاروائی میں کئی مہینے لگ رہے ہیں ۔ محمد عبداللہ اقبال منیار نے بھی داخلوں کے آغاز سے پہلے اسکالر شپ مہیا کرانے کے لئے حکومت پر زور دیا ہے۔

اسکالرشپ اسکیم کی آخری تاریخ میں توسیع سے اقلیتوں میں خوشی

کرناٹک کے رائچور شہر کی مختلف سماجی وملی تنظیموں نے اسکالر شپ کیلئے آخری تاریخ میں توسیع کی سہولت سے مکمل استفاد ہ کرنے کی عوام سے اپیل کی ہے ۔ سماجی کارکنوں نے فلاحی و ترقیاتی اسکیموں کے تعلق سے عوام کوبیدار کرنے کیلئے جگہ جگہ  بیداری پروگرام منعقد کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز