طلبہ مثبت سوچ کے ساتھ آگے بڑھیں اور ملک کی ترقی میں نمایاں کردار ادا کریں : ڈاکٹراسلم پرویز

Aug 15, 2017 03:59 PM IST | Updated on: Aug 15, 2017 03:59 PM IST

حیدرآباد : طلبہ کو مثبت سوچ کے ساتھ آگے بڑھنا چاہیے اور ملک کی تعمیر و ترقی میں نمایاں کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے۔ خود سے پہلے دوسروں کا خیال رکھنا، لوگوں کی مدد کرنا اور خود غرضی سے پرہیز ہی مثبت سوچ ہے۔ ان خیالات کا اظہار مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے وائس چانسلرڈاکٹر محمد اسلم پرویز نے آج یہاں یوم آزادی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ یوم آزادی کے موقع پر یونیورسٹی میں رنگا رنگ تقاریب کا انعقاد عمل میں آیا۔ وائس چانسلر ڈاکٹر محمد اسلم پرویز نے عمارت انتظامی کے سامنے پرچم کشائی کی۔ بعد ازاں یونیورسٹی کے طلبا و طالبات نے ڈاکٹر کرن سنگھ اٹوال، اسسٹنٹ پروفیسر ہندی اور ڈاکٹر مظفر حسین خاں، اسسٹنٹ پروفیسر تعلیم و تربیت کی رہنمائی میں قومی ترانہ پیش کیا۔

قومی ترانے کے بعد نظامت فاصلاتی تعلیم آڈیٹوریم میں ثقافتی پروگراموں کا انعقاد ہوا۔ اس ضمن میں طلبا و طالبات کی ٹیم نے اقبال کے تحریر کردہ ترانۂ ہندی ’’سارے جہاں سے اچھا ہندوستاں ہمارا‘‘، سردار جعفری کے ترانۂ اردو ’’اردو زباں، پیاری زباں‘‘ اور گلزار کا لکھا یونیورسٹی ترانہ ’’یہ جامعۂ زبانِ اردو‘‘ پیش کیا۔ ترانوں کی پیش کش میں طبلہ نواز سردار خان، ہارمونیم نواز ارون کمار اور پیڈ موسیقار مانس دا نے اپنی پر اثر موسیقی سے سماں باندھ دیا۔

طلبہ مثبت سوچ کے ساتھ آگے بڑھیں اور ملک کی ترقی میں نمایاں کردار ادا کریں : ڈاکٹراسلم پرویز

اس موقع پر مرکز مطالعاتِ اردو ثقافت (سی یو سی ایس) کی جانب سے ایک مختصر ڈاکیومنٹری فلم ’’ہمارے رہنماؤں کے پیغامات‘‘ بھی دکھائی گئی جس میں ملک کے مختلف رہنماؤں مثلاً مہاتما گاندھی، جواہر لعل نہرو ، مولانا آزاد، سردار پٹیل اور سبھاش چندر بوس وغیرہ کی تقریروں کی ریکارڈنگ پیش کی گئیں۔ اس ڈاکیومنٹری فلم کی تیاری میں مرکز مطالعاتِ اردو کے میوزیم کیوریٹر مسٹر حبیب احمد اور انسٹرکشنل میڈیا سنٹر کے کیمرہ پرسن مسٹرعبید اللہ ریحان کی کوششیں شامل تھیں۔

یوم آزادی کے موقع پر پورے کیمپس کو ترنگے جھنڈے اور زعفرانی، سفید اور سبز رنگ کے کپڑوں سے سجایا گیا تھا۔ یوم آزادی تقاریب کے انعقاد میں سی یو سی ایس اور دفتر تعلقات عامہ نے نمایاں کردار ادا کیا۔ جلسہ کی نظامت سی یو سی ایس کے مشیر اعلیٰ انیس احسن اعظمی نے کی اور آخر میں تمام حاضرین کا شکریہ ادا کیا۔ اس موقع پر یونیورسٹی کے تدریسی و غیر تدریسی عملہ کے ارکان اور طلبا و طالبات کی کثیر تعداد موجود تھی اور آڈیٹوریم کھچاکھچ بھرا ہوا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز