بنگلور :  گائے ، بیل اور بچھڑے کی معلومات حاصل کرنے پہنچی ٹیم پر مشتعل ہجوم کا حملہ ، کیس درج

وکلاء‘ عدالت کے کمشنر‘ گائے کا تحفظ کرنے والی غیرسرکاری تنظیم کے ارکان اور پولیس پر ایک ہجوم نے اُس وقت حملہ کردیا جب وہ یہاں ایلاہنکا میں مویشیوں کی جانکاری حاصل کرنے گئے تھے۔

Oct 18, 2017 07:18 PM IST | Updated on: Oct 18, 2017 07:18 PM IST

بنگلورو : وکلاء‘ عدالت کے کمشنر‘ گائے کا تحفظ کرنے والی غیرسرکاری تنظیم کے ارکان اور پولیس پر ایک ہجوم نے اُس وقت حملہ کردیا جب وہ یہاں ایلاہنکا میں مویشیوں کی جانکاری حاصل کرنے گئے تھے۔ حملہ آوروں نے عدالتی کمشنر کی کار پر حملہ کردیا۔ بنگلور پولیس کمشنر ٹی سنیل کمار نے بتایا کہ ہجوم نے ان افراد کا تعاقب کرتے ہوئے اُنہیں زدوکوب کیا۔ پولیس نے انسداد گئو کشی کے تحت ایک معاملہ اور حملہ کے تحت الگ معاملہ درج کیا ہے۔

دوڈا بتالی میں غیرمجاز مذبح کا پتہ چلایا گیا تھا۔ گاؤ گیان فاؤنڈیشن کی کویتا جین نے بتایا کہ ایک گیریج میں یہ مذبح چلایا جارہا تھا جہاں 15 گائیوں کے علاوہ بیل ، بچھڑے 4 کنٹینرس میں پائے گئے اس کے علاوہ کھلی جگہ میں بھی کچھ جانوروں کو باندھا گیا تھا۔ جب لوگوں سے ان جانوروں کو چھوڑنے کے لئے کہا گیا تو اُنہوں نے انکار کردیا اور دیکھتے ہی دیکھتے 250 کے قریب افراد جمع ہوگئے اور اُنہوں نے ٹیم پر حملہ کردیا۔ یہ ارکان پولیس کی گاڑیوں میں بیٹھ کر جس کے شیشے ہجوم نے توڑ دیئے تھے وہاں سے بچ کر نکلنے میں کامیاب ہوگئے۔

بنگلور :  گائے ، بیل اور بچھڑے کی معلومات حاصل کرنے پہنچی ٹیم پر مشتعل ہجوم کا حملہ ، کیس درج

علامتی تصویر

پولیس نے بتایا کہ اگرچہ کوئی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی ہے تاہم مقامی اقلیتی طبقہ کے لیڈران کے ساتھ ایک اجلاس منعقد کرتے ہوئے اس مسئلہ کا حل تلاش کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

کویتا جین نے بتایا کہ اُس نے جوشائن انتونی کے ساتھ غیرمجاز مذبح کو روکنے کے لئے عدالت میں عرضی داخل کی تھی‘ عدالت نے عرضی گذاروں سے کہا تھا کہ وہ شہر میں کم سے کم ایسے 5 غیرمجاز مذبح کی نشاندہی کرے چنانچہ عرضی گذاروں نے پولیس‘ وکلاء اور عدالتی کمشنرس کو لے کر کم سے کم 3 غیرمجاز مذبح کی نشاندہی کی تھی جو جے جے نگر‘ چندرا لے آؤٹ اور شکاری پالیا میں موجود تھے۔ چوتھے مقام کی نشاندہی کے لئے جانے والی ٹیم پر ہجوم نے حملہ کردیا۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز