رائچور کی عمل سارہ کو نیٹ میں رینک حاصل کرنے پر میسورو میڈیکل کالج میں ملی سیٹ

Aug 08, 2017 06:17 PM IST | Updated on: Aug 08, 2017 06:17 PM IST

رائچور۔ نوجوانوں کو تعلیم سے جوڑنے کے لئے انکی حوصلہ افزائی ضروری ہے ۔ خاص طور پر لڑکیوں کی تعلیم کے سلسلے میں معاشرے کو دور اندیشی اور غیر جانبداری کا مظاہر ہ کرنا ہوگا۔ گذشتہ چند برسوں سے تعلیم کے شعبے میں مسلم لڑکیاں عمدہ مظاہر ہ کرتی آرہی ہیں ۔ لیکن لڑکوں کا ناقص مظاہرہ بھی ایک تشویشناک بات ہے ۔ ان خیالات کا اظہار کرناٹک کے رائچور میں منعقدہ ایک تہنیتی تقریب کے دوران ماہرین تعلیم نے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

میڈیکل کونسل آف انڈیا کی جانب سے میڈیکل کورسس میں داخلوں کیلئے نیٹ امتحان منعقد کیا جاتا ہے ۔ اس امتحان میں لاکھوں کی تعداد میں طلباء حصہ لیتے ہیں ۔ اس امتحان میں کامیاب ہونا جوئے شیر لانے سے کم نہیں ہے ۔ لیکن بعض ہونہار طلباء ایسے بھی ہیں جنہوں نے اپنی قابلیت سے نیٹ امتحان میں لوہا منوایا ہے ۔ انہی طلباء میں کرناٹک کے رائچور ضلع کے ایک چھوٹے سے گاؤں یرگیرا کی ’’عمل سارہ‘‘نامی طالبہ  بھی شامل ہے ۔ عمل سارہ نے جاریہ سال نیٹ میں رینک حاصل کیا ہے اور اس طالبہ کو میسورو کے میڈیکل کالج میں فری سیٹ مل گئی ہے ۔ ایک چھوٹے سے گاؤں سے تعلق رکھنے کے باوجود نیٹ میں عمدہ مظاہرہ کرنے پر کرناٹک مسلم ایسوسی ایشن نامی تنظیم کی جانب سے عمل سارہ کو تہنیت پیش کی گئی ۔ تہنیتی پروگرام میں ہمدردان ملت نے عمل سارہ کی ہر ممکنہ مدد کرنے کا یقین دلایا۔ عمل سارہ کے والد پیشے سے ایک چھوٹے تاجر ہیں اور اپنی لاڈلی کی کامیابی کو لیکر کافی خوش ہیں ۔ عمل سارہ میڈیکل تعلیم مکمل کرکے قوم وملت کیلئے کام کرنے کا عزم رکھتی ہیں۔

رائچور کی عمل سارہ کو نیٹ میں رینک حاصل کرنے پر میسورو میڈیکل کالج میں ملی سیٹ

تہنیتی پروگرام میں دانشوروں اور ماہرین تعلیم نے عمل سارہ کے تئیں نیک تمناؤں کا اظہار کیا ۔ دانشوروں نے اس ہونہار طالبہ کی کامیابی کو نوجوانوں کیلئے ایک مثال قرار دیا ۔ واضح رہے کہ قابل وباصلاحیت نوجوانوں کی حوصلہ افزائی کیلئے سینٹرل مسلم ایسوسی ایشن شاخ رائچور کی جانب سے ہر سال تہنیتی تقاریب منعقد کی جاتی ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز