چدمبرم کے بیٹے پر سی بی آئی کی نظر، دہلی سے چنئی تک 14 ٹھکانوں پر چھاپے

May 16, 2017 09:34 AM IST | Updated on: May 16, 2017 11:43 AM IST

چنئی۔ سابق مرکزی وزیر اور سینئر کانگریس لیڈر پی چدمبرم کے بیٹے كارتک چدمبرم کے ٹھکانوں پر سی بی آئی نے چھاپہ ماری کی ہے۔ منگل کی صبح چنئی، دہلی اور نوئیڈا کے 14 ٹھکانوں پر سی بی آئی نے چھاپہ ماری کی۔ نیوز 18 انڈیا کی رپورٹ کے مطابق سی بی آئی کی انفرادی ٹیمیں صبح 7 بجے ان کے گھر پہنچیں۔ کارروائی ابھی جاری ہے۔ معلومات کے مطابق کاغذات ضبط کرنے کا عمل جاری ہے۔ کمپیوٹر کے ہارڈ ڈسک کو بھی ضبط کیا گیا ہے۔

 پی چدمبرم بی جے پی حکومت پر جان بوجھ کر پریشان کرنے کا الزام لگا چکے ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا ہے کہ انہیں بدنام کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ بتاتے چلیں کہ یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ جب چدمبرم کے بیٹے كارتک پر کارروائی ہوئی ہے۔ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے كارتک کو 45 کروڑ روپے کے ایف ای ایم کے کی خلاف ورزی کی صورت میں نوٹس جاری کیا تھا۔ الزام تھا کہ وہ واسن ہیلتھ کئیر پرائیویٹ لمیٹڈ کمپنی سے مبینہ طور پر جڑے ہوئے ہیں۔ اس کمپنی سے منسلک غیر ملکی سرمایہ کاروں سے کئی ناموں سے قریب 2100 کروڑ روپے لئے گئے۔ وہیں، 162 کروڑ روپے الگ سے بھی لئے گئے۔ الزام ہے کہ اس لین دین میں كارتک چدمبرم کی کمپنی میسرس ایڈواونٹج اسٹریٹجک کنسلٹنگ پرائیوٹ لمیٹڈ بھی براہ راست طور پر شامل تھی۔ اس کمپنی کو اس میں قریب 45 کروڑ روپے ملے تھے۔

چدمبرم کے بیٹے پر سی بی آئی کی نظر، دہلی سے چنئی تک 14 ٹھکانوں پر چھاپے

پی چدمبرم: فائل فوٹو، پی ٹی آئی

ای ڈی کے نوٹس کے بعد پی چدمبرم نے کہا تھا کہ ای ڈی کی کارروائی اور نوٹس سے ایسا لگتا ہے کہ كارتک کنٹرولر تھے اور دو کمپنیوں کے درمیان ہوئے لین دین میں براہ راست فائدہ اٹھا رہے تھے۔ ای ڈی كارتک کو اس معاملے میں گھسیٹنے کے لئے بے بنیاد الزام لگا رہا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز