معروف کمپنیوں کے نقلی شرٹس تیار کرنے والی فیکٹری پر پولیس کا چھاپہ

May 13, 2017 09:26 PM IST | Updated on: May 13, 2017 09:26 PM IST

بنگلورو۔ اگر آپ برانڈیڈ کپڑوں کے شوقین ہیں توآپ کو کافی دیکھ بھال کر خریداری کرنے کی ضرورت ہے۔ کیونکہ جس طرح ملٹی نیشنل برانڈس کی اپنے ملک میں نقل ہو رہی ہے اور انکے ٹیگ استعمال کر ان برانڈوں کے نام سے شرٹس ، جینس اور پینٹس تیار کی جا رہی ہیں، انکو دیکھ  کر اصل اور نقل میں فرق کرنا مشکل ہے ۔ لیکن برانڈیڈ کی جو خصوصیات اس کو برانڈ بناتی ہیں، وہ ان میں نہیں ہوتیں ، جب کہ یہ اصل کے ایک چوتھائی سے کم میں تھوک میں بیچی جاتی ہیں اور ان کو خریدنے والے دوکاندار آپ کو انہین برانڈیڈ کے ریٹ پر ہی بیچتے ہیں ۔

سنٹرل کرائم برانچ پولس نے معروف کمپنیوں کے نقلی شرٹس تیار کرنے والی ایک فیکٹری پر چھاپہ مار کرایک شخص کو گرفتار کرکے اس کے پاس موجود تقریبا 81 لاکھ روپئے مالیت کے شرٹس ضبط کیے ہیں ـ ملزم کی شناخت ہِتیش کے طور پر کی گئی ہے ـ ملزم پر الزام ہے کہ وہ ناگرباوی میں واقع فیکٹری میں ٹومی، ہِل فیگر، ایلن سولی، ایل پی اور یوایس پولو کمپنیوں کے نقلی شرٹس تیار کرکے اسے دوگنی قیمتوں پرمارکیٹ میں فروخت کرتا تھا ـ ذرائع کے مطابق سی سی بی پولس نے فیکٹری اور گودام پر چھاپہ مار کر ملزم کو گرفتار کرلیا ہے ـ انّاپورنیشوری نگر پولس نے معاملہ درج کرکے ملزم سے مزید تحقیقات شروع کردی ہے ـ

معروف کمپنیوں کے نقلی شرٹس تیار کرنے والی فیکٹری پر پولیس کا چھاپہ

ری کمنڈیڈ اسٹوریز