غربت کی مار جھیل رہی صبا اور زینت نے حاصل کی نمایاں کامیابی ، بنی دوسروں کیلئے مثال

May 25, 2017 05:35 PM IST | Updated on: May 25, 2017 05:35 PM IST

بیدر : ایک طرف جہاں صاحب ثروت اپنی اولادوں کو بہترین تعلیم دلانے کے لیے نہ صرف بے شمار پیسہ خرچ کرتے ہیں بلکہ ساتھ ہی ساتھ فکرمند بھی رہتے ہیں۔ وہیں دوسری جانب مزدوری پیشہ لوگوں کے بچے کسی مدد اور کسی کے رحم و کرم کے بغیر ہی اعلی نمبرات حاصل کر اپنے والدین کا نام روشن کر رہے ہیں ۔ اگر ان کو تھوڑی بھی مدد مل جائے ، تو وہ سونے پر سہاگہ والی بات ہوگی۔

ضلع بیدر کے چٹگوپہ کےالامین ڈاکٹر ممتاز احمد خان ہائی اسکول کی طالبہ صبا فردوس بنت محمد قیام الدین نے دسوین جماعت کے امتحان میں 596 نمبرات یعنی 95 فیصد نمبرات حاصل کرکے شاندار کامیابی درج کی ہے۔ صبا کے والد کے مطابق طالبہ کو کوئی خاص تعلیمی سہولیت بھی مہیا نہیں کرائی گئی تھی ، جیسے خصوصی ٹیوشن وغیرہ بھی نہیں کرائے گئے۔ صرف اسکول میں اساتذہ کی تعلیم اور طالبہ کی محنت سے ہی ایسی اہم کامیابی حاصل ہوئی ہے ۔خیال رہے کہ صبا کے والد محمد قیام الدین چٹگوپہ میں ایک کو آپریٹیو سوسائٹی میں اٹینڈینٹ کی خدمات انجام دیتے ہیں ۔

غربت کی مار جھیل رہی صبا اور زینت نے حاصل کی نمایاں کامیابی ، بنی دوسروں کیلئے مثال

اسی طرح ایک اورطالبہ زینت پروین بنت محمد خواجہ میاں درویش نے 94 فیصد نمبرات حاصل کرنے کے نمایاں کامیابی پائی ہے۔ اس لڑکی کے والدکے پاس نہ تو کوئی خاص کاروبار ہے او نہ ہی کوئی ہنر ۔ وہ ایک سائیکل پر گھر گھر جاکے کباڑ جمع کر کے بازار میں فروخت کرتے ہیں اور اس سے حاصل ہونے والی آمدنی سے گھریلو ضروریات پوری کرتی ہیں ۔انہوں نے بتایا کہ اس لڑکی کی آئندہ کی تعلیم کو جاری رکھنے کیلئے ان کے پاس مالی صلاحیت نہیں ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز