کرناٹک : سڑک کی تعمیر کے نام پر توڑی گئی تاریخی ہاشمیہ مسجد کی دیوار ، مہینوں بعد بھی تعمیر نو نہیں ، لو گ پریشان

مساجد میں لوگ عبادت کرنے کے علاوہ پروردگار کے حضور میں زندگی میں چین وامن کیلئے دعائیں کرتے ہیں ، لیکن کرناٹک کے رائچور میں ایک مسجد ایسی ہے ، جہاں سرکاری پیچیدگیوں کی وجہ سے نمازیوں کو مختلف دشواریوں کا سامنا ہے

Dec 18, 2017 11:23 PM IST | Updated on: Dec 18, 2017 11:23 PM IST

رائچور : لوگ قلبی وروحانی سکون حاصل کرنے کے لئے مساجد یعنی اللہ کے گھر حاضرہوتے ہیں ۔ مساجد میں لوگ عبادت کرنے کے علاوہ پروردگار کے حضور میں زندگی میں چین وامن کیلئے دعائیں کرتے ہیں ، لیکن کرناٹک کے رائچور میں ایک مسجد ایسی ہے ، جہاں سرکاری پیچیدگیوں کی وجہ سے نمازیوں کو مختلف دشواریوں کا سامنا ہے ، جس کی وجہ سے مقامی مسلمانوں میں شدید تشویش کی لہر پائی جارہی ہے ۔

کرناٹک کے رائچور کی ہاشمیہ مسجد ایک تاریخی مسجد ہے ۔ بس اسٹینڈ، ہوٹلس، اسکول اورکالجز ہونے کی وجہ سےمقامی لوگوں کےعلاوہ دوردرازعلاقوں کے مسافرنماز ادا کرنے کے لئے ہاشمیہ مسجد آتے ہیں ، لیکن گذشتہ چند مہینوں سے یہاں نمازیوں کو کافی پریشانیاں لاحق ہیں ۔ قابل ذکر ہے کہ مسجد کے سامنے واقع سڑک کی توسیع کے سلسلے میں تقریبا تین ماہ قبل مسجد کی دیوار توڑ دی گئی تھی ۔ بتایا جارہا ہے کہ سڑک توسیع کے سلسلہ میں ڈپٹی کمشنر، رائچور بلدیہ، وقف بورڈ اور مسجد کمیٹی کے درمیان اتفان رائے نہیں ہو پا رہا ہے۔ دیوار توڑنے کے بعد سڑک کی دھول اور صوتی آلودگی کی وجہ سے نمازیوں کی صورتحال ناقابل بیان ہے ۔

کرناٹک : سڑک کی تعمیر کے نام پر توڑی گئی تاریخی ہاشمیہ مسجد کی دیوار ، مہینوں بعد بھی تعمیر نو نہیں ، لو گ پریشان

امبیڈکر چوراہے سے گزرنے والی اس سڑک کا شمار شہر کی مصروف ترین سڑکوں میں کیا جاتاہے ۔ مقامی لوگ مسجد میں آنے والوں کی پریشانی کو مدنظر رکھتے ہوئے جلد از جلد اس مسئلہ کو حل کرنے کا مطالبہ کررہے ہیں ۔ نمازیوں کا کہنا ہے کہ سڑک سے متصل مسجد کے احاطہ میں موجود قبروں کی بے حرمتی پر مسلمان ہی نہیں بلکہ غیر مسلم افراد بھی اعتراض کررہے ہیں ، کیونکہ سڑک سے اٹھنے والی دھول راست طور پر قبروں گررہی ہے ۔بتایا جارہا ہے کہ بے انتہا دھول کی وجہ سے مسجد کے موذن نے بھی خدمات انجام دینے سے انکار کردیا ہے اور انہیں ڈسٹ ایلرجی کی شکایت ہوگئی ہے ۔

حیرت کی بات یہ ہے کہ مسجد کی دیوار کی تعمیر کے لئے اینٹ، ریت، سیمنٹ اوردیگر سامان تیار ہے ، لیکن سرکاری پیچیدگیوں کی وجہ سے نمازیوں کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ مسجد کمیٹی کے ارکان، ڈپٹی کمشنر اور متعلقہ حکام کیا اقدامات کرتے ہیں ۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز