طلباء میں چھپی صلاحیتوں کے فروغ کے لیے حیدرآباد میں سائنس اکیڈمی کا قیام

Mar 04, 2017 04:35 PM IST | Updated on: Mar 04, 2017 04:35 PM IST

حیدر آباد۔  طلباء میں سائنسی مزاج  اور ان میں چھپی صلاحیتوں کے فروغ کے لیے حیدرآباد میں سائنس اکیڈمی کا قیام عمل میں لایا گیا ہے۔ اس اکیڈمی میں نہ صرف طلباء بلکہ سائنس کے اساتذہ کے لیے بھی تربیت کا انتظام ہے ۔ حیدرآبادی نوجوان  سائنس داں عبداللطیف کی گذشتہ ایک دہائی سے  یہ کوشش رہی ہے کہ ہمارے اسکول کے طلباء کو محض نظریاتی طورپرہی نہیں بلکہ عملی سائنس بھی پڑھائی جائے۔ اسی کوشش میں عبد اللطیف نے تین سال پہلے موبائل سائنس لیب تیار کی اوراس سال انہوں نےایک قدم آگےبڑھتے ہوئےایک سائنس اکیڈمی قائم کی ہے۔ اس سائنس اکیڈمی کی خاص بات یہ ہے کہ یہاں طلباء کو پڑھانے کے لئے نہ صرف جدید ترین سائنسی ساز و سامان کے ساتھ  فزکس کیمسٹری اور بیالوجیکل سائنسس تجربہ گاہیں بلکہ یونیورسٹی کی سطح کا تجربہ رکھنے والے اساتذ ہ کی خدمات حاصل کی گئی ہیں۔ سائنس اکیڈمی میں آنھویں جماعت تا  پوسٹ گریجویشن کی سطح تک کے طلباء کیلئے سائنس کے بنیادی تجربات سے لیکر اعلیٰ درجہ کے تجربات کی تربیت دی جاتی ہے۔

حیدرآباد میں طلباء کے لئے سائنس اکیڈمی کے قیام کے لئے امریکہ میں مقیم ہندوستانی مسلمانوں کی تنظیم آئی ایم آر سی اور ٹیکنالوجی صنعت کا معروف ادارہ ٹیک مہیندرا نے تعاون کیا  ہے ۔ اکیڈمی میں اس سال سرکاری اسکول کے سو اساتذہ کو سائنسی تجربات کی تعلیم کے جدید طریقوں سے واقف کروایا جائے گا ۔

طلباء میں چھپی صلاحیتوں کے فروغ کے لیے حیدرآباد میں سائنس اکیڈمی کا قیام

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز