کیرالہ : طالبہ سے گلا ملنے پر اسکول انتظامیہ نے کیا سسپینڈ ، ہائی کورٹ نے بھی فیصلہ کو رکھا برقرار

کیرالہ ہائی کورٹ نے طالبہ سے گلا ملنے کی وجہ سے طالب علم کو نکالنے کے ترواننت پورم کے ایک اسکول کے فیصلہ کو صحیح قرار دیا ہے

Dec 17, 2017 02:00 PM IST | Updated on: Dec 17, 2017 02:00 PM IST

ترواننت پورم : کیرالہ ہائی کورٹ نے طالبہ سے گلا ملنے کی وجہ سے طالب علم کو نکالنے کے ترواننت پورم کے ایک اسکول کے فیصلہ کو صحیح قرار دیا ہے ۔ اس سلسلہ میں کیرالہ کمیشن برائے اطفال نے اسکول کو اپنا فیصلہ واپس لینے کا حکم دیا تھا ، جس کو ہائی کورٹ میں جسٹس شاجی پی چالے کی بینچ نے خارج کردیا ۔

قابل ذکر ہے کہ یہ معاملہ 21 جولائی کا ہے ۔ ترواننت پورم کے سینٹ تھامس سینٹرل اسکول میں آرٹ مقابلہ کے دوران ایک طالبہ کے انعام جیتنے کے بعد اس کے ساتھ پڑھنے والے طالب علم نے اس سے گلے مل کر مبارکباد دی تھی ۔ یہ بات وہاں موجود ٹیچروں کو غیر مناسب لگی ۔ طالب علم نے اس کی تصویر سوشل میڈیا پر بھی اپ لوڈ کردی تھی ، جس کی وجہ سے اسکول انتظامیہ ناراض ہوگئی اور ڈسپلینری جانچ کے بعد اسکول انتظامیہ نے ستمبر میں طالب علم کو نکالنے کا فیصلہ کیا۔

کیرالہ : طالبہ سے گلا ملنے پر اسکول انتظامیہ نے کیا سسپینڈ ، ہائی کورٹ نے بھی فیصلہ کو رکھا برقرار

اسکول کے اس فیصلہ کے کلاف طالب علم کے والدین نے کیرالہ کمیشن برائے اطفال میں شکایت کی ۔ چار اکتوبر کو کمیشن نے اسکول کا حکم دیا کہ وہ طالب علم کو اسکول آنے اور کلاسوں میں حاضری کی اجازت دے ۔ تاہم اسکول نے کمیشن کے اس حکم کو ہائی کورٹ میں چیلنج کیا ۔ اسی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے اب ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ کمیشن صرف مشورہ دے سکتا ہے ، لیکن اسکول میں ڈسپلن بنائے رکھنے کی ذمہ داری پرنسپل کی ہے اور کمیشن اس میں مداخلت نہیں کرسکتا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز