ہندی دیوی دیوتا پر قابل اعتراض تبصرہ کرنے پر کتی مہیش حیدرآباد سے شہر بدر

Jul 09, 2018 10:00 PM IST | Updated on: Jul 09, 2018 10:00 PM IST

حیدرآباد : تلگو فلموں ڈائریکٹر ونقاد کتی مہیش کو حیدرآباد پولیس نے شہر سے شہر بدرکردیا ہے۔ چند دن قبل کتی مہیش نے بھگوان رام کے خلاف سنگین ریمارکس کئے تھے ، جس پر ان کے خلاف کئی ہندو تنظیمیں احتجاج کررہی ہیں ۔حیدرآباد پولیس نے مہیش کے خلاف ہندووں کے جذبات مجروح کرنے کا معاملہ بھی درج کرلیا۔ہندووں کے روحانی رہنما پری پورنانند نے پیر کے روز کتی مہیش کے خلاف یادادری تک احتجاجی مظاہرہ کرنے کا اعلان کیا تھا ۔حالات کو بگڑتے دیکھ کر حیدرآباد پولیس نے پری پورنانند کو مکان پر نظر بند کردیا اور کتی مہیش کو تڑشہر بدرکرتے ہوئے آندھراپردیش پولیس کے حوالے کردیا۔مہیش کو انتباہ دیا گیا ہے کہ وہ پولیس کی اجازت لئے بغیر حیدرآباد میں داخل نہ ہوں۔

ڈی جی پی مہندر ریڈی نے چھ ماہ تک اس شہری بدری کااعلان کیا۔انہوں نے انتباہ دیا کہ اگر مہیش پولیس کی اجازت کے بغیر حیدرآبا دآتے ہیں تو ان کو گرفتار کرلیاجائے گااور ان کو تین سال تک کی سزا ہوسکتی ہے۔انہوں نے کہاکہ بھگوان رام کے خلا ف ریمارکس کئے ہیں ،جس سے عوام کے جذبات مجروح ہوئے ہیں۔اس سے ریاست میں لااینڈ آرڈر کا مسئلہ پیدا ہوسکتا ہے۔ مہندر ریڈی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مہیش کو شہر بدر کرتے ہوئے اے پی کے ضلع چتور میں واقع ان کے آبائی مقام لے جایا گیا۔

ہندی دیوی دیوتا پر قابل اعتراض تبصرہ کرنے پر کتی مہیش حیدرآباد سے شہر بدر

کتی مہیش۔ فائل فوٹو۔

انہوں نے کہاکہ مہیش کے ریمارکس سے سماج کے ایک طبقہ کے جذبات مجروح ہوئے ہیں ،جوابی احتجاج شرو ع کیاجارہا ہے ۔ہم کسی بھی ایسے اقدام کی اجازت نہیں دیں گے ،جس سے ریاست میں امن کو خطرہ ہو۔انہوں نے کہاکہ کوئی بھی سوشیل میڈیا،پرنٹ میڈیا یا ٹی وی چینلس میں کئے گئے کسی بھی ریمارکس جس سے سماج میں کشیدگی پید اہوتی ہے یا پھر عوام کے جذبات مجروح ہوتے ہیں تو قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز