اسلام قبول کرنے والی خاتون نے دوبارہ ہندو مذہب اختیار کیا، کہا میں بھٹک گئی تھی

تھرووننتھاپورم۔ کیرالا کے کاسرگوڑ ضلع میں کچھ عرصہ قبل اسلام قبول کرنے والی 23 سالہ خاتون نے دوبارہ ہندو مذہب کو اپنا لیا ہے۔

Sep 23, 2017 04:40 PM IST | Updated on: Sep 23, 2017 04:40 PM IST

تھرووننتھاپورم۔ کیرالا کے کاسرگوڑ ضلع میں کچھ عرصہ قبل اسلام قبول کرنے والی 23 سالہ خاتون نے دوبارہ ہندو مذہب کو اپنا لیا ہے۔ خاتون نے الزام لگایا کہ اس کا ایمان دوست کے بہکاوے میں بدل گیا اور اس نے تبدیلی مذہب کرا لی۔ بتا دیں کہ اتھیرا نے جولائی میں اپنے خاندان کو چھوڑ دیا تھا۔ 15 صفحات کے اپنے مکتوب میں اس نے لکھا کہ وہ اسلام کا مطالعہ کرنے جا رہی ہے۔ مذہب کی تبدیلی کے بعد اس نے اپنا نام عائشہ رکھ لیا۔ اس کے بعد اس نے اپنے خاندان کے ارکان کو مذہب کی تبدیلی کے بارے میں معلومات دی۔

اس کے بعد اس کے کنبہ کے ارکان نے پولیس میں شکایت درج کرائی جس پر وہ مجسٹریٹ کے سامنے پیش ہوئی۔ اسے 27 جولائی کو خواتین تحفظ گھر بھیج دیا گیا۔ تاہم، بعد میں کیرل ہائی کورٹ کے حکم  پر اسے خاندان کے ساتھ رہنے کے لئے بھیج دیا گیا۔ وہاں بھی وہ مذہب اسلام پر عمل کرتی رہی۔

اسلام قبول کرنے والی خاتون نے دوبارہ ہندو مذہب اختیار کیا، کہا میں بھٹک گئی تھی

ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اتھیرا نے کہا، "اسلام کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کے لئے اس نے مذہب تبدیل کرایا تھا۔

Loading...

ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اتھیرا نے کہا، "اسلام کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کے لئے اس نے مذہب تبدیل کرایا تھا۔" اس نے اپنے مسلم دوست کو عبادت کرتے دیکھا تھا اور اس سے ہی اسلام کے بارے میں پوچھا۔ اس کے دوست نے اسے اسلام کی کچھ کتابیں دے دیں۔ اتھیرا نے کہا کہ کتابوں کو پڑھ کر وہ الجھن میں پڑ گئی تھی۔

اتھیرا کے مطابق، ارش ودیا سماج میں جا کر وہ ہندو مذہب سے متاثر ہوئی۔ وہاں اسے ہندوتوا کے بارے میں معلومات حاصل ہوئی۔ یہاں مجھے احساس ہوا کہ اسلام مذہب کو اپنانا میری غلطی تھی۔ مجھے عقیدہ کے بارے میں زیادہ جانکاری نہیں تھی۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز