دہلی یونیورسٹی طلبہ یونین کے صدرمشکل میں پھنسے، یونیورسٹی نے ڈگری فرضی قراردیا

یہ معاملہ تب سامنے آیا جب کانگریس کی طلبہ یونٹ این ایس یوآئی نے تروولّر یونیورسٹی سے بسویا کی مارکشیٹ کی ایک تصویرجاری کرتے ہوئے فرضی ہونے کا دعویٰ کیا تھا

Oct 05, 2018 12:05 AM IST | Updated on: Oct 05, 2018 12:05 AM IST

تروولّریونیورسٹی کے رجسٹرارنے تمل ناڈو کے  ایجوکیشن سکریٹری اور پرنسپل  سکریٹری کو خط لکھ کر اطلاع دی ہے کہ دہلی یونیورسٹی طلبہ یونین (ڈی یو ایس یو) کے نومنتخب صدر انکیو بسویا تروولّر یونیورسٹی کے  میں کبھی زیرتعلیم نہیں تھے۔

اس خط میں انہوں نے لکھا ’’میں بتانا چاہتا ہوں کہ انکیو بسویا نے ہماری یونیورسٹی یا یونیورسٹی یا یونیورسٹی سے ملحق کسی بھی کالج میں کبھی بھی داخلہ نہیں لیا اورنہ ہی ہمارے طالب علم  رہے ہیں۔ ان کی طرف سے پیش سرٹیفکیٹ جعلی ہے۔  وہ ہمارے یونیورسٹی کی طرف سے جاری نہیں کیا گیا ہے۔

دہلی یونیورسٹی طلبہ یونین کے صدرمشکل میں پھنسے، یونیورسٹی نے ڈگری فرضی قراردیا

دہلی یونیورسٹی طلبہ یونین کے صدر انکیو بسویا کی ڈگری فرضی نکلی۔

ایگزامنیشن کنٹرولرنے بھی ایک خط جاری کرکے بتایا ہے کہ محکمہ امتحانات  دفتر کے کنٹرولر کے ریکارڈ کے معائنے میں پایا گیا کہ ان کا سرٹیفکیٹ صحیح نہیں ہے۔ یونیورسٹی کے ذرائع نے کہا کہ جانچ میں 72 فرضی سرٹیفکیٹ پائے گئے تھے، جسے لے کرشکایت بھی درج کرائی گئی تھی۔ یہ معاملہ تب سامنے آیا جب کانگریس کی طلبہ یونٹ نیشنل اسٹوڈنٹس یونین آف انڈیا (این ایس یو آئی) نے تروولّریونیورسٹی سے بسویا کی مارکشیٹ کی ایک تصویرجاری کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ یہ جعلی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:    دہلی یونیورسٹی کی طالبہ کی جعلی تصویر لگانا پاکستانی محکمہ دفاع کو پڑا مہنگا ، ٹویٹر اکاونٹ معطل

تمل ناڈو کانگریس کمیٹی کے صدر کو 7 ستمبر کو لکھے ایک خط میں ایگزامنیشن کنٹرولر نے کہا کہ یہ مطلع کیا جاتا ہے کہ مندرجہ ذیل امیدوارکی سرٹیفکیٹ کی تصدیق کرلی گئی ہے اورپایا گیا ہے کہ یہ سرٹیفکیٹ صحیح نہیں ہے، یہ ایک جعلی سرٹیفکیٹ ہے۔

واضح رہے کہ بسویا نے دہلی یونیورسٹی کے ایم اے پروگرام میں داخلہ لینے کے لئے تروولّر یونیورسٹی کی گریجویشن کی ڈگری پیش کی تھی، لیکن اس تنازعہ کے سامنے آنے کے بعد دہلی یونیورسٹی نے اس معاملے کے جانچ کے احکامات دیئے ہیں۔ آرایس ایس حمایت یافتہ اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد (اے بی وی پی) سے منسلک دہلی یونیورسٹی طلبہ یونین کے صدر بسویا نے این ایس یو آئی کی طرف سے لگائے گئے سبھی الزامات کی تردید کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:      وزیر اعظم نریندر مودی کی ڈگری کا کوئی ریکارڈ موجود نہیں: دہلی یونیورسٹی

یہ بھی پڑھیں:   کیمپس میں تشدد پر صدرجمہوریہ نے کہا : ملک میں غیرروادار ہندوستانی کیلئے کوئی جگہ نہیں

یہ بھی پڑھیں:   محنت ولگن سے تعلیم حاصل کرکے مستقبل روشن بناسکتے ہیں طلبا وطالبات: پروفیسر ابن کنول

یہ بھی پڑھیں:   جائسی نے پدماوت کے ذریعہ تصوف کو اس دنیا سے جوڑا: پروفیسرہریش تریویدی

 

 

 

 

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز