حیدرآباد دوہرے بم دھماکے:11سال بعد فیصلہ، دو افراد مجرم قرار، دیگر دو بری

عدالت پیر کے روز سزا پر اپنا فیصلہ سنائے گی۔ ان دوہرے بم دھماکوں میں 44 افراد ہلاک جبکہ دیگر 68 زخمی ہوگئے تھے۔

Sep 04, 2018 11:55 AM IST | Updated on: Sep 04, 2018 04:08 PM IST

شہر حیدرآباد میں ہوئے دوہرے بم دھماکوں کے معاملہ کے حتمی فیصلہ کوعدالت نے آج سنا دیا ہے۔ چرلہ پلی جیل میں قائم کی گئی خصوصی این آئی اے عدالت کے جج نے فیصلہ سنایا۔

عدالت نے حتمی فیصلہ سناتے ہوئے دو افراد کو مجرم قرار دیا۔ اس معاملہ کے سلسلہ میں جیل میں چارافراد محروس ہیں جن میں سے دو کو مجرم قرار دیا گیا۔عدالت نے اکبر اسماعیل چودھری اورعنیق شفیق سید کو مجرم قرار دے دیا۔ عدالت نے بم رکھنے کی سازش کا بھی خاطی پایا جبکہ عدالت نے پونے سے تعلق رکھنے والے انصار احمد بادشاہ شیخ اورمحمد صادق اسرار کو بری قراردیا۔ حیدرآباد میں ہوئے ان دوہرے بم دھماکوں کے سلسلہ میں چارافراد کے خلا ف معاملہ چلایا گیا تھا جن میں سے عدالت نے دو کو بری قراردیا۔

حیدرآباد دوہرے بم دھماکے:11سال بعد فیصلہ، دو افراد مجرم قرار، دیگر دو بری

فائل فوٹو

اگست 2013میں میٹرو پولیٹن سیشن جج کی عدالت نے چار ملزمین کے خلاف الزامات وضع کئے تھے۔ دو ملزمین کی سزا کا اعلان اس ماہ کی دس تاریخ کو کیاجائے گا۔ یہ دھماکے 11سال پہلے شہر حیدرآباد کے گوکل چاٹ بھنڈار اور لمبنی پارک میں کچھ ہی دیر کے وقفہ کے بعد ہوئے تھے ۔ ان دھماکوں میں 42افراد ہلاک اور 50زخمی ہوگئے تھے۔ 7اگست کو بحث اور جوابی بحث کی تکمیل کے بعد جج سرینواس راو نے 27اگست کو اس معاملہ کا فیصلہ مقرر کیا تھا تاہم عدالت نے اس فیصلہ کوموخرکرتے ہوئے 4ستمبر کو فیصلہ سنانے کا اعلان کیا تھا اور آج عدالت نے اس معاملہ کا فیصلہ سنا دیا۔

Loading...

اس فیصلہ کے موقع پر جیل کے قریب اور شہر کے حساس علاقوں میں سیکوریٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔ ان دوہرے بم دھماکوں کی جانچ تلنگانہ پولیس کے کاونٹر انٹلی جنس شعبہ نے کی تھی اور تین ملزمین کے خلاف چارج شیٹ داخل کی تھی۔ ان میں سے بعض مفرور بتائے گئے ہیں۔ ملزمین کے خلاف دفعہ 302(قتل ) اور تعزیرات ہند کی مختلف دفعات کے ساتھ ساتھ دھماکہ اشیاء کے قانون ‘ دلسکھ نگر فٹ اوور برج کے نیچے سے برآمدبموں کے سلسلہ میں یہ الزامات وضع کئے گئے تھے۔ یہ بم پھٹنے سے رہ گئے تھے۔

اکتوبر 2008میں مہاراشٹر کے انسداد دہشت گردی دستے کی جانب سے گرفتار افراد میں یہ افرادشامل ہیں ۔ یہ افراد فی الحال چرلا پلی سنٹرل جیل میں ہیں۔ اس معاملہ کے دوران تقریباً 170گواہوں کی جرح اور جوابی جرح کی گئی تھی ۔ گوکل چاٹ بھنڈار میں ہوئے دھماکے میں 32افراد ہلاک جبکہ ریاستی سکریٹریٹ سے کچھ ہی میٹر کے فاصلے پر واقع لمبنی پارک اوپن ایر تھیٹر میں ہوئے دھماکہ میں مزید 10افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ ان دونوں دھماکوں میں 50سے زائد افراد زخمی ہوگئے تھے۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز