موہن بھاگوت کو صدر جمہوریہ بنانے کے لئے جعفرشریف کی تائید سے مچی ہلچل

Apr 04, 2017 06:39 PM IST | Updated on: Apr 04, 2017 06:39 PM IST

بنگلورو / رائچور۔ سابق مرکزی وزیر سی کے جعفر شریف نے ایک بار پھر صدر جمہوریہ کے عہدے کے لیے آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کے نام کی تائید کی ہے۔   انہوں نے موہن بھاگوت کی تائید میں  وزیراعظم کوخط لکھا ہے ۔ بنگلورو میں ای ٹی وی  سے خاص بات چیت کرتے ہوئے جعفر شریف نے کہا کہ  خط کے پیچھے کوئی سیاسی مقصد نہیں ہے۔ وہ یہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ مسلمان آر ایس ایس یا بی جے پی کے خلاف نہیں ہیں۔ ملک میں امن، بھائی چارگی قائم رہنا چاہئے ۔  ملک میں صرف کانگریس کو نہیں آر ایس ایس کو بھی سیکیولرزم کی بات کرنا چاہئے۔ موہن بھاگوت نیک انسان ہیں ۔ صدرجمہوریہ کےعہدے کی ذمہ داری کونبھا سکتےہیں۔

 جعفرشریف نے یہ بھی واضح کیا کہ وہ بی جے پی میں شامل نہیں ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں کانگریس کمزورہوئی ہے لیکن میں کانگریس میں ہی رہونگا۔ بی جے پی میں شامل ہونے کا سوال ہی نہیں پیدا ہوتا ہے۔ بی جے پی اگر مدعو کرتی ہے تب بھی نہیں جاؤنگا ۔ ادھر  کرناٹک کے رائچور میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کانگریس کے سینئر لیڈر اوررائچور کے سابق رکن اسمبلی سید یاسین نے  جعفر شریف کے بی جے پی میں شامل ہونے سے متعلق سوال کی بھی تردید کی ۔ انہوں نے  واضح کیا  کہ سابق وزیر ریلوے جعفر شریف کا دل بدلی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ۔ انہوں نے کہا کہ جعفر شریف کانگریس پارٹی کے ایک سینئر لیڈر ہیں اور وہ گذشتہ  کافی برسوں سے پارٹی کی خدمت کرتے آ رہے ہیں ۔ سید یاسین نے کہا کہ موہن بھاگوت کو اگلے ملک کا صدر بنانے سے متعلق بیان انکا اپنا نجی خیال ہے ۔

موہن بھاگوت کو صدر جمہوریہ بنانے کے لئے جعفرشریف کی تائید سے مچی ہلچل

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز