بنگلور و:  القرآن اکیڈمی کے این سی پی یوایل سینٹر میں قرآن کی تعلیم کےساتھ ساتھ سکھائی جا رہی اردو زبان

موجودہ دور میں انگریزی میڈیم اسکولوں کی بھرمارہے ، جس کی وجہ سے نوجوان نسل اردو سے دور ہوتی جا رہی ہے۔

Aug 02, 2017 11:24 PM IST | Updated on: Aug 02, 2017 11:24 PM IST

بنگلورو : موجودہ دور میں انگریزی میڈیم اسکولوں کی بھرمارہے ، جس کی وجہ سے نوجوان نسل اردو سے دور ہوتی جا رہی ہے۔ اس مسئلہ کو دیکھتے ہوئے بنگلورو میں القرآن اکیڈمی نےاین سی پی یوایل کا سینٹرشروع کیا۔ اس سینٹر میں بڑی تعداد میں طلبہ عربی کے ساتھ اردو زبان بھی سیکھ رہے ہیں۔

بنگلورو کے اولڈ پنشن محلہ، میسورروڈ میں سال 2014 سے قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان کامرکز قائم ہے۔ یہاں دینی مکتب میں تعلیم حاصل کرنے کےساتھ ساتھ طالبات نے این سی پی یوایل کےایک سالہ اردو ڈپلومہ کورس میں بھی داخلہ لیا ہے۔ یعنی یہ طالبات قرآن کی تعلیم کےساتھ اردو زبان بھی سیکھ رہی ہیں ۔ انگریزی میڈیم اسکولوں میں پڑھنے والی ان طالبات کواردو حرف تہجی، املا اور اردو گرامرکی دیگراصناف سے واقف کیا جا رہا ہے۔ اردو نظمیں، کہانیاں، تاریخی اورسماجی مضامین پڑھائےجا رہے ہیں۔ ان کی ہفتہ میں دو دن یعنی سنیچر اور اتوار کو اردو کلاسز ہوتی ہیں ۔

بنگلور و:  القرآن اکیڈمی کے این سی پی یوایل سینٹر میں قرآن کی تعلیم کےساتھ ساتھ سکھائی جا رہی اردو زبان

الحیدروومین ویلفیئر سوسائٹی کے تحت قائم القرآن اکیڈمی نے دینی تعلیم کے ساتھ اردو تعلیم کو عام کرنے کا بیڑا اُٹھایا ہے۔ اکیڈمی کے ذمہ دارکہتے ہیں کہ علاقےمیں کئی انگریزی میڈیم اسکول ہیں۔ اکثراسکولوں میں انگریزی کےساتھ کنڑ اور ہندی مضامین پڑھائےجا رہے ہیں ، جس کی وجہ سےعلاقہ کے طلبہ آہستہ آہستہ اردو زبان سے دور ہوتے جا رہے ہیں۔

گزشتہ چارسال میں یہاں تقریبا300 طلبہ نے قومی کونسل کا اردو ڈپلومہ کورس مکمل کیا ہے۔ موجودہ بیچ میں80 طلبہ اردوکی تعلیم پارہے ہیں۔ انگریزی اور علاقائی زبانوں کے غلبہ کی وجہ سےاردوکی نوجوان نسل اپنی مادری زبان سے دورہوتی جا رہی ہے ۔ ماہرین کہتے ہیں کہ یہ رجحان خطرناک ہے۔ کسی بھی قوم اور طبقہ کوصحیح معنوں میں ترقی حاصل کرنے کیلئے اپنی مادری زبان کوبہترطریقہ سےسیکھنا چاہئے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز